سوئمنگ پول کا پل

لندن کا پول تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption یہ سوئمنگ پول اپنی طرز کا دنیا کا پہلا سوئمنگ پول ہو گا

لندن کی دو دس منزلہ عمارتوں کو سوئمنگ پول کے ذریعہ جوڑا جا رہا ہے۔

یہ پول، جسے سکائی پول کہا جا رہا ہے، دنیا کا سب سے پہلا پول ہو گا جس کا پیندا شفاف ہو گا۔

اس میں تیرنے والے تیراک 35 میٹر کی اونچائی سے نیچے پیدل چلنے والوں کو دیکھ سکیں گے۔

اس پروجیکٹ کو ایکرسلے او کالاگھن نامی کمپنی چلائے گی جس نے دنیا کے مختلف حصوں میں ایپل کے سٹورز کے ڈیزائن بنائے ہیں۔

یہ پول لندن کے علاقے بیٹرسی کے نزدیک پراپرٹی کے ایک بڑے ترقیاتی منصوبے کا حصہ ہے جسے ایمبیسی گارڈنز ایٹ نائن ایلمز کہا جا رہا ہے۔

امید ہے کہ یہ منصوبہ 2019 تک مکمل ہو جائے گا لیکن اس تصور کو کئی چیلنجوں کا بھی سامنا ہے۔ مثلاً اس پول پر دو مختلف ملحقہ عمارتوں کی دو طاقتیں اثر چھوڑتی ہیں جن کو دو مختلف بنیادوں پر بنایا گیا ہے۔

انجینیئر برائن ایکرسلے نے بی بی سی کو بتایا کہ دونوں عمارتیں ہوا میں ایک دوسرے سے ذرا مختلف حرکت کرتی ہیں سو ایک بڑا مسئلہ یہ ہے کہ ہم ایسی عمارتوں کے درمیان ممکنہ طور پر ایک ایسا نازک ڈھانچہ بنا رہے ہیں جو مختلف طریقے سے حرکت کرتی ہیں۔

بیئرنگز ڈھانچے کو سہارا دیں گے اور کسی حد تک حرکت کی بھی اجازت دیں گے۔ تاہم پول کے اطراف میں پانی کے دباؤ کو بھی مدِ نظر رکھنا چاہیے۔

’آپ کے پاس وہ اطراف ہیں جو جدا ہونے کی کوشش کر رہی ہیں اور اس کے علاوہ پانی کا وزن بھی ڈھانچہ اٹھا رہا ہے، اور آپ کو یہ سارا وزن ان عمارتوں پر لادنا ہے جن میں خود بھی ایک دوسرے کی نسبت سے حرکت کرنے کا رجحان ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption سوئمنگ پول میں تیرنے والے 35 میٹر نیچے پیدل چلنے والوں کو دیکھ سکیں گے

ایکرسلے نے کہا کہ یہ سوئمنگ پول شیشے سے نہیں بلکہ شفاف ایکریلک سے بنایا جائے گا جو پلاسٹک کی ایک قسم ہے۔

انھوں نے کہا کہ ایکریلک کو اندر سے صاف رکھنے کے لیے پانی کو متواتر فلٹر کیا جائے گا اور شیشے کے دوسرے ڈھانچوں کی طرح پول کے بیرونی حصے کو بھی باقاعدگی سے صاف کیا جائے گا۔

یہ پول بالی مور گروپ کو کمیشن کیا گیا ہے اور اس کے چیف ایگزیکٹیو شان ملریان کہتے ہیں کہ اس پول کے استعمال کرنے سے ایسا لگے گا کہ مرکزی لندن میں ہوا میں تیراکی کی جا رہی ہے۔

انسٹیٹیوشن آف سٹرکچرل انجینیئرز کی سارا فرے کہتی ہیں کہ ان کے علم کے مطابق یہ اس قسم کا دنیا کا سب سے پہلا پول ہے۔ ’مجھے نہیں معلوم کہ (اس سے پہلے) شیشے کا کوئی اور سوئمنگ پول اس قدر اونچائی پر بنایا گیا ہے۔‘

انھوں نے بی بی سی کو بتایا کہ ’یہ تصور ایک دلچسپ چیلنج ہے۔ یہ بڑا اچھا ہے کہ تعمیراتی کام کا دائرہ کار وسیع ہو رہا ہے اور شہر میں دلچسپ اور چیلنجنگ نئے جزو متعارف کیے جا رہے ہیں۔‘

اسی بارے میں