زکربرگ کا پناہ گزینوں تک انٹرنیٹ پہنچانے کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption ایک اندازے کے مطابق دنیا بھر میں تقریباً تین ارب افراد کو انٹرنیٹ تک رسائی حاصل ہے

فیس بک کے بانی مارک زکربرگ نے پناہ گزینوں کے لیے بنائے گئے اقوامِ متحدہ کے کیمپوں تک انٹرنیٹ کی سہولت پہنچانے کے منصوبے کا اعلان کیا ہے۔

نیویارک میں اقوام متحدہ کے فورم پر بات کرتے ہوئے زکربرگ نے کہا کہ اس سے پناہ گزینوں تک امداد پہنچانے اور ان کے گھر والوں کے ساتھ رابطے بحال کرنے میں مدد ملے گی۔

زکربرگ نے مزید کہا کہ ’فیس بک آئندہ پانچ سالوں کے دوران دنیا میں ہر ایک کو انٹرنیٹ تک رسائی دلوانے کی مہم کا حصہ بھی بنے گی۔‘

انھوں نے کہا کہ انٹرنیٹ اقوام متحدہ کو ترقیاتی مقاصد حاصل کرنے اور لوگوں کو غربت سے نکالنے کے لیے مددگار ثابت ہوگا۔

اس مہم کے لیے دستخط کرنے والوں میں راک سٹار بونو، اداکارہ شارلیز تھیرون، کاروباری شخصیات میں بل گیٹس اور رچرڈ برانسن اور وکی پیڈیا کے شریک بانی جمی ویلز شامل ہیں اور اسے کنیکٹیوٹی معاہدے کا نام دیا گیا ہے۔

ایک اندازے کے مطابق دنیا بھر میں تقریباً تین ارب افراد کو انٹرنیٹ تک رسائی حاصل ہے۔

اس کنیکٹیوٹی مہم کا مقصد مزید چار ارب افراد تک انٹرنیٹ کو پہنچانا ہے۔

زکربرک نے کہا کہ ایک ماہ میں ایک بار فیس بک استعمال کرنے والے صارفین کی تعداد 15 لاکھ ہے جبکہ گذشتہ ماہ ایک دن میں فیس بک استعمال کرنے والوں کی تعداد پہلی مرتبہ ایک ارب تک پہنچ گئی تھی۔

انھوں نے کہا کہ ان کی ویب سائٹ تک رسائی میں مسلسل اضافہ ہوگا۔

اسی بارے میں