’انسٹاگرام سے شہرت پانے والی سوشل میڈیا کے خلاف سرگرم‘

تصویر کے کاپی رائٹ Essena ONeill
Image caption ایسینا کہتی ہیں کہ اپنے آپ کو مشہور کرنے کے علاوہ ان کا دوسرا کوئی مقصد نہیں تھا

سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام سے شہرت پانے والی ایک نوجوان لڑکی نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹس کے تاریک پہلوؤں کے بارے میں ایک جذباتی بیان دیا ہے۔

انھوں نے اپنی آن لائن تصاویر کے عنوانات تبدیل کر دیے ہیں اور ان کے بارے میں وہ کہتی ہیں کہ وہ مصنوعی اور خود کو مشہور کرنے کے لیے ہیں۔

آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والی 18 سالہ ایسینا اونیل کے انسٹاگرام پر نہ صرف پانچ لاکھ سے زائد فالوورز ہیں اور سوشل میڈیا ان کے لیے ذریعۂ آمدن بھی رہا ہے۔

انھیں انسٹاگرام پر اپنی بظاہر مکمل اور مثالی زندگی کی عکاسی کرتی ہوئی تصاویر پوسٹ کر کے شہرت حاصل ہوئی ہے۔

تاہم اب وہ کہتی ہیں کہ وہ اس سب کے باعث سوشل میڈیا پر آنے والی لائیکس کی عادی ہوگئی ہیں اور اندر سے خود کو خالی محسوس کرتی ہیں۔

انھوں نے اپنے یوٹیوب چینل پر 17 منٹ دورانیے کی ایک ویڈیو پوسٹ کی ہے جس میں انھوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹوں پر پیش کیے جانے والے ’غیر صحت مندانہ‘ رجحانات کے خلاف کام کرنے کا عہد کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Essena ONeill

اونیل نے ایک ویب سائٹ بھی مرتب کی ہے جس کا مقصد سماجی رابطے کے فرقے کے خلاف جدوجہد کرنا ہے۔

نہ صرف انھوں نے اپنے انسٹاگرام سے اپنی 2000 تصاویر ہٹا دی ہیں بلکہ سماجی رابطوں کی مختلف ویب سائٹوں پر اپنے دیگر اکاؤنٹ بھی بند کر دیے ہیں۔

وہ کہتی ہیں کہ اپنے آپ کو مشہور کرنے کے علاوہ ان کا دوسرا کوئی مقصد نہیں تھا۔

ایسینا کا کہنا ہے کہ ’میں ان سماجی رابطوں کی ویب سائٹوں کی حمایت نہیں کروں گی جو ایسے اشتہارات کے بل بوتے پر اربوں کماتے ہیں جن سے میں متفق نہیں ہوں۔

’میں انٹرنیٹ پر مثالی نظر آنے والی لڑکیوں کو گھنٹوں دیکھا کرتی تھی۔ پھر جب میں خود ان لڑکیوں میں شامل ہو گئی تو بھی میں خوش نہیں تھی اور نہ ہی مطمئن یا اپنی ذات کے ساتھ پُرسکون۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Essena ONeill

وہ کہتی ہیں کہ وہ انسٹاگرام پر باقی بچ جانے والی تصویروں کے عنوانات تبدیل کر رہی ہیں تا کہ ان کے ’استحصال، عامیانہ پن، اور عدم تحفظ‘ کو افشا کر سکیں۔

اپنی اکتوبر کی ایک پوسٹ میں وہ کہتی ہیں کہ ’سوشل میڈیا حقیقی نہیں ہے۔ بلکہ یہ سماجی منظوری، لائیکس، خیالات کی توثیق، فالوورز کی تعداد میں اضافے پر مشتمل دنیا ہے۔

’یہ خودپسندی جیسے عوامل سے مرتب بہترین طور پر ترتیب شدہ دنیا ہے۔ میں بھی اس میں شامل ہو گئی تھی۔‘

اونیل کی ماضی کی ایک تصویر کا عنوان تبدیل کر دیا گیا ہے جب وہ 15 برس کی تھیں اور ورزش کے لباس میں تھیں۔

تصویر کے نئے عنوان میں’بہت زیادہ ورزش‘ اور ’روزانہ کیلوریزکے حساب کتاب‘ کی عکاسی کی گئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Essena ONeill

وہ کہتی ہیں کہ’سوشل میڈیا کی شہرت کا کوئی بھی عادی شخص ہوش مند نہیں ہوتا، جیسا کہ میں خود بھی تھی۔‘

انسٹاگرام پر بکینی میں ملبوس ان کی ایک تصویر کا عنوان بھی تبدیل کر دیا گیا ہے: ’سانس اندر کھنچی ہوئی، مخصوص رخ پر کھڑی ہوئی، سینہ باہر کو نکلا ہوا۔ میں بس اتنا چاہتی ہوں کہ نوجوان بچیوں کو پتہ چل جائے کہ یہ نہ تو اصل زندگی ہے اور نہ ہی متاثرکن۔ یہ توجہ حاصل کرنے کے لیے مصنوعی طور پر تخلیق کی گئی مثالی تصویر ہے۔‘

اسی بارے میں