مائیکرو سافٹ ریاستی ہیکنگ سے خبردار کرے گی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اگر حکومت کی جانب سے جاسوسی کا مجوزہ قانون منظور ہو گیا تو صارفین کو حکومتی نگرانی سے متعلق آگاہ کرنے پر مائیکرو سافٹ کے لیے مسائل پیدا ہو سکتے ہیں

ٹیکنالوجی کی کمپنی مائیکرو سافٹ کا کہنا ہے کہ اگر اسے یہ شبہ ہوا کہ حکومت اس کے صارفین کی ای میلز اور دیگر آن لائن اکاؤنٹس ہیک کرنے کی کوشش کر ہی ہے تو وہ انھیں خبردار کر دے گی۔

ایسے تمام صارفین جو آؤٹ لُک، ون ڈرائیو اور دیگر خدمات استعمال کرتے ہیں انھیں ایسی کسی بھی کارروائی کے بارے میں مطلع کیا جائے گا۔

ہیکروں کی سی آئی اے اہلکاروں کی معلومات تک ’رسائی‘

مائیکرو سافٹ کا کہنا ہے کہ جن صارفین کو ایسی تنبیہہ موصول ہو وہ اپنے ڈیٹا کے تحفظ کے لیے مزید اقدامات کریں۔

یہ اقدام برطانوی حکومت کے ان ہدایات کے متضاد ہے جس میں ٹیکنالوجی کی کمپنیوں کو نگرانی کے بارے میں زیادہ بات کرنے سے روکا گیا ہے۔

اس سے پہلے ٹوئٹر، فیس بک، گوگل اور یاہو سمیت کئی دوسری کمپنیوں نے بھی اپنے صارفین کو ایسے حملوں سے باخبر کرنے کا وعدہ کیا تھا۔

مائیکرو سافٹ کہنا ہے کہ وہ پہلے ہی لوگوں کو اس بارے میں آگاہ کر دیتی ہے کہ ان کے اکاؤنٹس کو نشانہ بنایا گیا ہے یا سائبر مجرموں نے اس کی سکیورٹی میں خلل پیدا کیا ہے، تاہم اب وہ یہ بھی بتائے گا کہ آیا اس کے پیچھے کسی ملک کا ہاتھ ہے۔

مائیکرو سافٹ کے بلاگر سکاٹ چرینی کا کہنا ہے کہ ’ان سائبر حملوں کی شناخت اس لیے ضروری ہے کہ عام سائبر مجرموں کی نسبت یہ حملے زیادہ جدید اور دیرپا ہوتے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مائکرو سافٹ کا کہنا ہے کہ صارفین کو یہ یقینی بنانا چاہیے کہ ان کے آلات میں موجود سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہیں، ان میں اینٹی وائرس موجود ہے اور یہ سکین کیے گئے ہیں

ان کا مزید کہنا ہے کہ نوٹیفیکیشن میں صرف یہ نہیں ہونا چاہیے کہ حملہ آور نے اکاؤنٹ تک رسائی حاصل کی ہے بلکہ یہ بتایا جانا چاہیے کہ اکاؤنٹ کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

مائیکرو سافٹ کا کہنا ہے کہ وہ یہ تفصیلات تو نہیں بتائے گی کہ کیا وجہ تھی جو کسی ملک نے اکاؤنٹس کو نشانہ بنایا تاہم کافی ثبوت کے بعد صارف کو آگاہ کیا جائے گا کہ یہ ادارہ ذمہ دار ہے۔

اس کا مزید کہنا تھا کہ صارفین کو یہ بات یقینی بنانا چاہیے کہ ان کے آلات میں موجود سافٹ ویئر اپ ڈیٹ ہیں، ان میں اینٹی وائرس موجود ہے۔

اگر حکومت کی جانب سے جاسوسی کا مجوزہ قانون منظور ہو گیا تو صارفین کو حکومتی نگرانی سے متعلق آگاہ کرنے پر مائیکرو سافٹ کے لیے مسائل پیدا ہو سکتے ہیں۔

تحقیقات کے لیے اختیارات کے اس بل کا مقصد ریاست، پولیس اور جاسوسوں کی جانب سے جرائم، دہشت گردی اور خطرات سے متعلق ڈیٹا جمع کرنے کے طریقے کو اپ ڈیٹ کرنا ہے۔

اس بل کی منظوری کے بعد کمپنیوں کے لیے یہ غیر قانونی ہو جائے گا کہ وہ صارفین کو نگرانی کے بارے میں آگاہ کریں۔

مائیکرو سافٹ نے ایسی صورت حال میں اپنی پالیسی کے متنازع ہوجانے کے بارے میں کوئی بات نہیں کی۔

اسی بارے میں