نیٹ فلکس اب دنیا کے بیشتر ممالک میں دستیاب

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption نیٹ فلکس کا قیام سنہ 1997 میں عمل میں آیا تھا

انٹرنیٹ پر ٹی وی پروگرام اور فلمیں دکھانے والی امریکی کمپنی نیٹ فلکس کا کہنا ہے کہ وہ اب دنیا کے بیشتر ممالک میں اپنی خدمات فراہم کر رہی ہے۔

کمپنی کے چیف ایگزیکیٹو ریڈ ہیسٹنگ نے امریکی ریاست لاس ویگاس میں جاری ٹیکنالوجی کی عالمی نمائش کے دوران اپنی تقریر میں بتایا کہ کمپنی نے مزید 130 ممالک میں اپنی سہولیات کا آغاز کر دیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ چین میں سروس شروع کرنے کے لیے کوششیں جاری ہیں جبکہ اس کے علاوہ شمالی کوریا، شام اور کرائمیا وہ ممالک ہیں جہاں امریکی قوانین کی وجہ سے کمپنی سروس نہیں دے سکتی۔

ریڈ ہیسٹنگ کا یہ بھی کہنا تھا کہ نیٹ فلکس اس ہی سال ہائی ڈائنامک رینج (ایچ ڈی آر) نشریات کا بھی آغاز کر دے گی۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ بہت سے ممالک میں انٹرنیٹ کی نامکمل سہولیات کے باعث صرف شہری علاقوں کے لوگ ہی اس سہولت سے مستفید ہو سکیں گے۔

نیٹ فلکس نے اپنے مواد کے سب ٹائٹلز، عبارتوں اور ڈبنگ کو کورین ، چینی اور عربی زبانوں میں بھی جاری کرنا شروع کر دیا ہے۔ جس کے بعد کمپنی کے مواد کے لیے استعمال کی جانے والی زبانوں کی تعداد 21 ہوگئی ہے۔

نیٹ فلکس کے پھیلاؤ کے اعلان پر ٹیکنالوجی فرم گارٹنر سے تعلق رکھنے والے فرنانڈو الیزیدا نے کہا ہے کہ’ہمیں اندازہ تھا کہ نیٹ فلکس دنیا میں ہر جگہ پہنچ جائے گی، لیکن یہ سب ہماری سوچ سے کہیں جلدی ہوگیا۔‘

ریڈ ہیسٹنگ کے مطابق نیٹ فلکس کی چینی حکام کے ساتھ بات چیت جاری ہے لیکن کسی نتیجے پر پہنچنے میں ابھی مزید وقت درکار ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ٹی وی اور فلم سٹریمنگ کی صنعت رو بہ ترقی ہے

انھوں نے کہا کہ ’چین میں آپ کو اپنی سروسز شروع کرنے کے لیے حکومت کی خصوصی اجازت کی ضرورت ہوتی ہے جس کے لیے ہم مستقل کوشش کر رہے ہیں اور بہت تحمل سے کام لے رہے ہیں۔‘

تاہم سٹریٹجی اینالیٹکس کے مائک گڈمین کا کہنا ہے کہ ’چین میں مارکیٹ تلاش کرنا ایک مشکل کام ہوگا کیونکہ وہاں پہلے ہی تین مقامی کمپنیاں کامیابی سے چل رہی ہیں۔‘

ریڈ ہیسٹنگ کہنا ہے کہ فی الحال وہ مختلف ممالک کے علاقائی پروگرام دکھانے کی بجائے پہلے سے موجود مواد کی ترویج پر ہی توجہ دیں گے۔

ریڈ ہیسٹنگ نے اپنی کمپنی کی نئے اعدادوشمار بھی حاضرین کے سامنے پیش کیے۔

انھوں نےکہا کہ وہ اپنے صارفین کو مجموعی طور پر روزانہ 125 گھنٹے کی تفریح فراہم کرتے ہیں جبکہ سنہ 2015 کے آخری تین ماہ میں کمپنی نے 12 کروڑ گھنٹوں کی ویڈیوز نشر کیں، جو 2014 کے مقابلےمیں 50 فیصد زیادہ ہیں۔

نیٹ فلکس کا قیام سنہ 1997 میں عمل میں آیا تھا اور دنیا بھر میں اس کے کروڑوں صارفین ہیں۔

اسی بارے میں