شمالی کوریا: حکومت مخالفین کی یو ایس بی کے عطیات کی اپیل

تصویر کے کاپی رائٹ THINKSTOCK
Image caption یو ایس بی سٹیکس شمالی کوریا لے جانے والے گروہوں کو مقامی حکام کو رشوت بھی دینی پڑتی ہے

انسانی حقوق کی دو امریکی تنظیموں نے شمالی کوریا میں حکومت مخالف سیاسی کارکنوں کو یو ایس بی سٹِکس بھجوانے کے لیے عطیات کی درخواست کی ہے۔

ملک کی کمیونسٹ حکومت سے منحرف افراد ہر سال تقریباً دس لاکھ یو ایس بی سٹکس شمالی کوریا سمگل کرتے ہیں۔

شمالی کوریا کا غباروں کے ذریعے پروپیگینڈا شمالی کوریا کی فوج کے سربراہ کو ’سزائے موت‘

سمگل کی جانے والی یو ایس بی سٹکس میں امریکی فلمیں، جنوبی کوریا کے ڈرامے اور دیگر بین الاقوامی معلومات ہوتی ہیں۔

شمالی کوریا میں یہ یو ایس بی سٹکس غیرقانونی ہیں اور ان کو سمگل کرنا انتہائی خطرناک کام تصور کیا جاتا ہے۔ جو گروہ اپنی جان کو خطرے میں ڈال کر انھیں سمگل کرتے ہیں اکثر انھیں تمام خرچہ بھی خود ہی برداشت کرنا پڑتا ہے۔

یو ایس بی سٹکس شمالی کوریا لے جانے والے گروہوں کو مقامی حکام کو رشوت بھی دینی پڑتی ہے، اس کے علاوہ ان کی سٹکس اکثر جنوبی کوریا کے حکام کی جانب سے ضبط کر لی جاتی ہیں کیونکہ جنوبی کوریا کا موقف ہے کہ غیر قانونی سرگرمیوں کے باعث دونوں ممالک کے مابین کشیدگی میں اضافہ ہوتا ہے۔

یو ایس بی سٹکس کے لیے عطیات کی اپیل کرنے والی تنظیم ہیومن رائٹس فاؤنڈیشن سے وابستہ ایلکس گلیڈیسٹائن نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’خوراک کے بعد شمالی کوریا کے عوام کو جس چیز کی سب سے زیادہ ضرورت ہے وہ علم ہے۔‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’شمالی کوریا کے عوام کو انٹرنیٹ تک رسائی نہیں ہے، ان کا بیرونی دنیا سے کوئی رابطہ نہیں ہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ شمالی کوریا کے مسئلے کا حل تعلیم ہی ہے۔‘

اسی بارے میں