انڈونیشیا نے بلاگنگ ویب سائٹ ٹمبلر پر پابندی عائد کر دی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ’ہمیں اس پر پابندی پہلے عائد کرنی تھی اور ان کو بعد میں مطلع کرنا تھا‘

انڈونیشیا نے بلاگنگ پلیٹ فارم ٹمبلر پر فحش مواد ہونے کے باعث اس پر پابندی لگا دی ہے۔

انڈونیشیا کی وزارت اطلاعات کے ای بزنس ڈایریکٹر اظہر حسیم نے بی بی سی کو بتایا کہ ٹمبلر پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ یاہو سے مشاورت کے بغیر کیا گیا ہے۔

’ہمیں اس پر پابندی پہلے عائد کرنی تھی اور ان کو بعد میں مطلع کرنا تھا۔‘

رواں ماہ کےآغاز میں انڈونیشیا نے ٹمبلر کو حکم دیا تھا کہ ہم جنس پرستی کے ایموجیز ہٹا دیے جائیں۔

واضح رہے کہ فیس بک اور چند دیگر سماجی رابطوں کی ویب سائٹس کے برعکس ٹمبلر فحش مواد کی اجازت دیتا ہے۔

انڈونیشیا کی میڈیا کے مطابق حکام نے فحش مواد کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے 500 کے قریب ویب سائٹوں پر پابندی عائد کی ہے اور ٹمبلر پر پابندی اسی کریک ڈاؤن کا حصہ ہے۔

اس سے قبل انڈونیشیا کی سب سے بڑی انٹرنیٹ سروس نے نیٹ فلکس پر چلنے والے مواد کے پیش نظر اس کو بلاک کردیا تھا۔

گذشتہ مئی ویمیو کو بھی بلاک کردیا گیا تھا۔

انڈونیشیا نے ماضی میں ٹوئٹر جیسی سوشل میڈیا کمپنیوں کو کہا تھا کہ وہ فحش مواد روکنے کے لیے اقدامات کریں۔ جو کمپنیاں حکومتی حکم کی تعمیل نہیں کرتیں ان کے خلاف انڈونیشیا کے قوانین کے خلاف کارروائی کی جا سکتی ہے۔

اسی بارے میں