نقشے کی مدد سے جنگوں کی تاریخ مرتب کرنے کی کوشش

تصویر کے کاپی رائٹ Nodegoat
Image caption جنگوں پر مبنی نقشے میں مختلف ادوار کی نشاندہی کے لیے مختلف رنگوں کا استعمال کیا گیا ہے

ہالینڈ کی ایک کمپنی کی جانب سے تاریخ میں ہونے والی تمام جنگوں پر مبنی ایک نقشہ مرتب کیا جا رہا ہے۔

نقشے کو بظاہر دیکھ کے ایسا لگتا ہے گویا امریکہ اور یورپ دنیا کے سب سے خونریز علاقے ہوں۔

تاریخ میں پیش آنے والے تمام تنازعات پر مبنی نقشہ حال ہی میں منظر عام پر آیا ہے۔ اس نقشے کی تیاری میں درکار تمام معلومات علمی کتب سے مرتب کرنے کے بجائے معلوماتی ویب سائٹ وکی پیڈیا سے جمع کی گئی ہیں۔ یاد رہے کہ وکی پیڈیا پر عام لوگ نہ صرف معلومات اپ لوڈ کرسکتے ہیں بلکہ درج معلومات میں اپنی مرضی کے مطابق ترامیم بھی کرسکتے ہیں۔

ہالینڈ کی معلومات اکٹھا کرنے والی ویب سائٹ نوڈگوٹ ایک مخصوص نظام کے تحت تمام معلومات کو یکجا کرتی ہے۔ یہ معلومات ڈی بی پیڈیا ویب سائیٹ (وکی پیڈیا پر موجود تمام معلومات جمع کرنے والی) اور وکی ڈیٹا کی ڈیٹابیس سے جمع کی جاتی ہے۔ وکی ڈیٹا پہ موجود معلومات کو نہ صرف انسان بلکہ کمپیوٹر بھی پڑھ سکتے ہیں اور استعمال میں لا سکتے ہیں۔

نوڈگوٹ کے پر تشدد واقعات پر مبنی نقشے کے مطابق تاریخ کی سب سے پہلی جنگ جو کہ ریکارڈ کا حصہ ہے تقریباً ڈھائی ہزار سال قبل از مسیح میں زولو کے نام سے مشرقی چین میں لڑی گئی تھی۔

اس نقشے کے مطابق اگلے ہزار سال کے دوران کسی بھی دوسری جنگ کا سراغ نہیں ملتا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption نوڈ گوٹ نے دو ہزار چھ سو 57 جنگوں کی تاریخ اور جغرافیائی معلومات جمع کی ہے

تاہم نقشے میں زولو کے بعد جس دوسری جنگ کا ذکر ہے وہ 15ویں صدی قبل از مسیح کے وسط میں مصری اور کنعانی فوجوں کے مابین لڑی گئی تھی۔

نقشے کی تیاری کے لیے وضع کردہ طریقہ کار میں موجود کمزوریوں کے باعث چند واضح غلطیاں بھی نظر آتی ہیں۔ نقشے کے مطابق برطانوی زمین پر آخری لڑائی سنہ 2008 میں لڑی گئی تھی۔ مانچسٹر میں سنہ 2008 میں ہونے والے ہنگاموں کو چند اخبارات کی جانب سے ’پکاڈلی کی جنگ‘ کا نام دیا گیا تھا جسے نوڈگوٹ کے نظام نے جنگ گردانتے ہوئے نقشے میں شامل کرلیا تھا۔

اس ہی طرح انتہائی جنوبی علاقوں کے ’ آپریشن شوا پولر‘ نامی جس تنازعے کو نقشے میں شامل کیا گیا ہے وہ اصل میں تنازعہ تھا ہی نہیں بلکہ سنہ 1990 میں چلی کی جانب سے انٹارکٹیکا بھیجا جانے والا ایک تحقیقی مشن تھا۔

نقشے پر نگاہ ڈالیں تو فرانس اور اس کے زیریں ممالک پہ جنگوں اور تنازعوں کے بڑے بڑے جھرمٹ نظر آتے ہیں۔

ہالینڈ کے شہر ہیگ میں قائم نوڈگیٹ کی سربراہی کمپنی لیب 1100 کے شریک بانی گیرٹ کیسلز کہتے ہیں امریکہ اور یورپ پر نظر آنے والے یہ جھرمٹ وکی پیڈیا کے صارفین اور ان کی دلچسپی کی عکاسی کرتے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’نقشہ پر جو دکھایا گیا ہے اس کی تعلیمی اہمیت ہے۔ ایک استاد اپنے شاگردوں کو یہ نقشہ دکھا کر سمجھا سکتا ہے کہ ہم جنگوں کے بارے میں کیا سوچتے اور جانتے ہیں۔ اس نقشے کی مدد سے وہ جنگوں کی تاریخ سے متعلق اپنے طالب علموں کا نکتہ نظر جان سکیں گے۔‘

انھوں نے کہا کہ یہ نقشہ وکی پیڈیا کےصارفین کو زیادہ جامع اور مفصل معلومات ترتیب دینے کےلیے راغب کرتا ہے۔

نوڈ گوٹ نے دو ہزار چھ سو 57 جنگوں کی تاریخ اور جغرافیائی معلومات جمع کی ہے۔

وکی پیڈیا کی جانب سے فراہم کی جانے والی معلومات کے غیر معتبر ہونے کے باعث تاریخ دان ایلن لیزلی اس پراجیکٹ کے حوالے سے تذبذب کا شکار نظر آتی ہیں۔

لیزلی کہتی ہیں ’اس میں کوئی شخص بھی ترامیم کرسکتا ہے۔ میں سمجھتی ہوں کہ تاریخ میں لڑی جانے والی تمام جنگوں کی معلومات جمع کرنا ایک بہت بڑا کام ہے۔ تاہم یہ بہتر ہوتا اگر معتبر طریقے سے معلومات اکٹھا کرنے کے لیے تاریخ دانوں اور ماہرین سے رابطہ کیا جاتا۔‘

لیزلی مزید کہتی ہیں کہ وسیع معنوں میں دیکھا جائے تو تنازعوں کی نشاندہی کرنے والا یہ نقشہ بہت ’دلچسپ‘ ہے تاہم ’یہ طے کرنا مشکل ہے‘ کہ جنگ کی اصل تعریف کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

جنگوں پر مبنی نقشے میں مختلف ادوار کی نشاندہی کے لیے مختلف رنگوں کا استعمال کیا گیا ہے۔

برطانوی شہر لندن کے امپیریل وار عجائب گھر کے تاریخ دان میٹ بروسنین کہتے ہیں یہ پراجیکٹ ’آن لائن ڈیٹا کے ممکنہ استعمال‘ کو ظاہر کرتا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’اس طرح کی معلومات (آن لائن) کے لیے تاریخی طور پر قطعی اور قبل اعتبار ہونا ناممکن ہے۔ تاہم اس سے یہ ضرور پتا چلتا ہے کہ کس طرح وسیع تاریخ پر مبنی بہت ساری معلومات کو جغرافیائی لحاظ سے ترتیب دے کی دلچسپ شکل میں پیش کیا جاسکتا ہے۔‘

نوڈگوٹ کا کہنا ہے کہ وہ اپنے وضع کردہ نظام میں بہتری لانے کے ساتھ اگلے ایک دو ہفتوں میں ترمیم شدہ نقشہ بنانے کے لیے کام کر رہے ہیں۔ کمپنی دستیاب معلومات کی روشنی میں سالانہ بنیادوں پر نقشے میں ترامیم کا ارادہ رکھتی ہے۔

اسی بارے میں