کروڑوں سال پرانا مکڑے کی شکل کا ڈھانچہ

تصویر کے کاپی رائٹ Garwood et al 2016
Image caption تحقیق کاروں نے سی ٹی سکین کی مدد سے اس کے نامکمل ڈھانچے کو مکمل کیا ہے

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ انھیں 30 کروڑ 50 لاکھ سال پرانا ایک ڈھانچہ ملا ہے جو اصل میں ’مکڑے‘ کی طرح ہے لیکن وہ مکڑا نہیں ہے۔

یہ ڈھانچہ کئی برسوں قبل فرانس سے ملا تھا لیکن کبھی بھی اس کی شناخت نہیں ہو سکی تھی کیونکہ اس کا آدھا حصہ چٹان میں چھپا ہوا تھا۔

تحقیق کاروں نے سی ٹی سکین کی مدد سے اس کے نامکمل ڈھانچے کو مکمل کیا ہے۔

ریسرچ جنرل میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق یہ ڈھانچہ بہت زیادہ مکڑے سے ملتا جلتا ہے۔

محققین کی ٹیم کے رکن ڈاکٹر گاروڈ نے بی بی سی کو بتایا کہ ’سی ڈی سکین کے ذریعے ہم نے چٹان میں موجود ڈھانچے کے سامنے کے آدھے حصے کو مکمل کیا تاکہ ہم اس کی اعضا کی مکمل تشریح کر سکیں۔‘

مکڑے کی طرح اس کی آٹھ ٹانگیں ہیں اور اس پر جبڑے کے نشانات بھی پائے جاتے ہیں۔ جس کے بعد اس آمر کی تصدیق ہوئی ہے کہ یہ مکڑے کی کوئی منفرد اور نئی قسم ہے لیکن یہ ایک خاص عرصے میں پائے جانے والوں مکڑوں کی انواع میں سے نہیں ہیں۔

اس ڈھانچے میں مکڑی کی طرح جالا پیدا کرنے کا عضو نہیں ہے لیکن اس کے نیچے کا حصہ لمبائی میں ہے اور تقریبًا 80 سال قبل پائی جانے والی جنگلی حیات کی جسامت ایسی ہوتی تھی۔

اس سے پہلے جو انواع دریافت کی گئی ہیں وہ ریشم پیدا کر سکتی تھیں یا وہ اپنی دُم کی مدد سے جالا بنتی ہیں۔

اسی بارے میں