گوگل کے ساتھ ہی ’اپریل فول‘ ہو گیا

منینز
Image caption جی میل کا بٹن دبانے سے منین کا کردار نظر آتا تھا جو ماییک کو پھینک کر چلا جاتا تھا

گوگل نے اپنی جی میل میں سے اس اپریل فول بٹن کو ہٹا دیا ہے جس سے دوسروں کو مزاحیہ اینیمشن بھیجی جا سکتی تھی۔ ایسا ان خبروں کے بعد کیا گیا ہے کہ اس سے لوگ کو اپنے دفتروں میں کافی مشکلات کا سامنا ہوا ہے۔

یہ بٹن جی میل کے نارمل ’سینڈ‘ بٹن کے ساتھ نظر آتا تھا اور اس سے اسے استعمال کرنے والے ایک ’منین کی تصویر بھیجتے تھے جو مائیکروفون کو پھینک دیتا تھا اور ای میل کے تھریڈ کو بند کر دیتا تھا۔

تاہم گوگل کے فورم پر اس کے متعلق کئی شکایت درج کی گئیں۔

اس کے بعد سے گوگل نے اسے ختم کر دیا ہے اور معذرت کی ہے۔

گوگل نے ایک بیان میں کہا کہ ’لگتا ہے کہ ہم نے اس سال اپنے آپ سے ہی مذاق کیا ہے۔‘

’ایک بگ کی وجہ سے مائیک ڈراپ فیچر کی وجہ سے ہنسی کے بجائے پریشانی زیادہ ہوئی۔ ہم واقعی معافی مانگتے ہیں۔‘

مائیک ڈراپ ایک ہر دلعزیز میمے ہے جس کے استعمال سے کوئی مائیکروفون کو پھینک کر جانے سے پہلے ایک جامع بیان یا تردید بھیج سکتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Gmail
Image caption سینڈ کے بٹن کے ساتھ ہی مائیک ڈراپ بٹن تھا

گوگل فوری طور پر بگ کی تفصیل بتانے سے قاصر ہے۔

گوگل کا کہنا ہے کہ جو یوزرز اب بھی اسے دیکھ رہے ہیں وہ ری لوڈ یا جی میل کو ری سٹارٹ کر کے اسے ختم کر سکتے ہیں۔

ایک یوزر نے کہا کہ ’مائیک ڈراپ کی وجہ سے میری نوکری چلی گئی۔‘

’میں ایک لکھاری ہوں اور مجھے اپنی ڈیڈ لائن پوری کرنا تھی۔ میں نے اپنی باس کو اپنے مضامین بھیجے لیکن پھر اس کی طرف سے کوئی جواب نہیں آیا۔ میں نے غلطی سے مائیک ڈراپ بٹن دبا دیا تھا۔‘

ایک اور نے کہا کہ وہ ایک کمپنی میں نوکری کے لیے تین ماہ سے انٹرویو دے رہے تھے لیکن اب حادثاتی طور پر اس کے ایچ آر کے شعبہ کو مائیک ڈراپ بٹن والا میمے بھیج دیا۔

جب یہ بٹن متعارف کرایا گیا تھا تو اس وقت یوزرز کو ایک جی میل پیغام کے ذریعے اس کے متعلق بتایا گیا تھا۔

اسی بارے میں