پروٹین کے انجیکشن ایلزئمرز روکنےمیں مددگار

تصویر کے کاپی رائٹ SPL

سائنس دانوں کا خیال ہے کہ قدرتی پروٹین کے انجیکشن ایلزہائمرز (معمر افراد میں نسیان کی بیماری) کی علامات اور اُس میں اضافے کو کم کر سکتے ہیں۔

یہ بات چوہوں پر کی جانے والی تحقیق سے حاصل کردہ اُمیدافزا ابتدائی نتائج کے بعد سامنے آئی ہے۔

آئی ایل 33 نامی پروٹین علاج حافظہ بہتر بنانے اور ایلزہائمرز سے متاثرہ افراد میں دماغ میں جمع ہونے والے مادے کو روکتی ہے۔

انسانوں پر اس علاج کی تحقیق جلد شروع کی جائے گی، لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ اِس بات کو جاننے میں برسوں لگ جائیں گے کہ آیا اس سے مریضوں کو فائدہ ہو گا یا نہیں۔

یہ تحقیق پی این اے ایس نامی جریدے میں شائع کی جائے گی۔

آئی ایل 33 انفیکشن اور بیماری کے خلاف مدافعتی دفاع کا حصہ ہے خاص طور پر دماغ اور ریڑھ کی ہڈی میں۔

ایلزہائمرز کا شکار مریضوں کے دماغ میں صحت مند انسانوں کی نسبت آئی ایل 33 کی مقدار انتہائی کم ہوتی ہے۔

گلاسکو یونیورسٹی اور ہانگ کانگ یونیورسٹی آف سائنس اور ٹیکنالوجی سے تعلق رکھنے والے تحقیق کاروں نے تجربہ کیا کہ آئی ایل 33 کی مقدار بڑھانے سے چوہے کے دماغ کیا تبدیلیاں ہو سکتی ہیں جو ایلزہائمرز کے مریض جیسی ہوں۔

انجیکشن لگانے کے ایک ہفتے کے اندر چوہوں کے حافظے میں بہت تیزی سے بہتری دیکھنے میں آئی اور ہم عمر چوہوں کے نسبت اِن کے حواس خمسہ کا نظام بھی بہتر ہوا۔

گلاسکو یونیورسٹی میں تحقیق کے سربراہ پروفیسر ایڈی لیو بہت پراُمید ہیں، تاہم وہ نتائج کے بارے میں محتاط بھی ہیں۔

’حوصلہ افزا اِس لیے کہ اِس حوالے سے لیبارٹری کے نتائج اور طبی استعمال کے درمیان کچھ فاصلہ موجود ہے۔ طبی تحقیق کے میدان میں بہت سی غلط یا جھوٹی ’کامیابیاں‘ ملتی ہیں جو ہمیں محنت طلب طبی ٹیسٹ کے مکمل ہو جانے تک احتیاط برتنے کا سبق دیتی ہیں۔‘

برطانیہ میں ایلزہائمرز کے حوالے سے کی جانے والی تحقیق کے ڈائریکٹر ڈاکٹر سمن رڈلی کہتے ہیں کہ ’ایلزہائمرز کی بیماری میں مدافعتی نظام کا کردار اور بیماری کے دیگر اسباب دوا کی تلاش کی کوششوں میں امید افزا شعبے ہیں۔‘

چوہوں میں کی جانے والی ابتدائی تحقیق میں ایلزہائمرز کی زہریلی پروٹین کو صاف کرنے کے لیے مدافعتی نظام کو بہتر بنانے پر روشنی ڈالی گئی ہے، تاہم کیا یہ طریقہ کار بیمار افراد کی مدد کر سکتا ہے یہ جاننے سے قبل ہمیں طبی ٹیسٹ کے نتائج دیکھنے ضرورت ہے۔

اسی بارے میں