نئی جگہ جا کر نیند کیوں نہیں آتی؟

تصویر کے کاپی رائٹ Science Photo Library
Image caption یہ کیفیت بعض سمندری جانوروں اور بعض پرندوں میں بھی پائی جاتی ہے

ایک مطالعے کے مطابق اجنبی جگہ پر جا کر نیند نہ آنے کی اصل وجہ دماغ کا خطرے سےآگہی کے لیے خبردار رہنا ہے۔

تحقیق میں سامنے آیا ہے کہ جب لوگ کسی نئی جگہ جاتے ہیں تو دماغ کا بایاں حصہ کسی خطرے سے آگاہی کے لیے مسلسل خبردار رہتا ہے۔

* نیند میں خلل سے بچنے کے لیے ’بیڈ ٹائم موڈ‘ کی ضرورت

لیبارٹری میں رضا کاروں پر کیےگئے تجربے میں پایاگیا کہ دماغ کا بایاں حصہ آوازوں کے ردِ عمل میں زیادہ متحرک رہا۔

یہ کیفیت بعض سمندری جانوروں اور بعض پرندوں میں بھی پائی جاتی ہے۔ تاہم یہ صورتحال نئی جگہ پر گذاری ہوئی پہلی رات میں ہی ہوتی ہے۔

براؤن یونیورسٹی کی یُوکا سساکی کا کہنا ہے کہ ’ایسا ممکن ہے کہ لوگ رات کو خبردار رہنے والی اس کیفیت کو بند کر کے سونے کا طریقہ سیکھ لیں۔‘

انھوں نے کرنٹ بائیولوجی نامی جریدے میں لکھا ’انسانی دماغ بہت لچک دار ہے۔‘

ان کے بقول جو لوگ اکثر نئی جگہوں پر جاتے ہیں ان میں نیند ٹوٹنے کا یہ مسئلہ باقاعدگی سے نہیں ہوتا۔

اسی بارے میں