’ہمارا اندازہ ہے کہ اپیل گاڑی بنا رہا ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Pasu Au Yeung FlickrCC
Image caption ایپل کی جانب سے گاڑی بنانے کا باقاعدہ اعلان نہیں کیا گیا ہے

گاڑیاں بنانے والی امریکی کمپنی فورڈ کے چیف ایگزیکیٹو مارک فیلڈز کا کہنا ہے کہ مستقبل قریب میں ان کے کاروباری حریف جنرل موٹرز یا کرائسلر نہیں بلکہ گوگل اور ایپل ہو سکتے ہیں۔

اقتصادی امور کے لیے بی بی سی کے مدیر کمال احمد سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ’ہمارا اندازہ ہے کہ اپیل کار کی تیاری میں مصروف ہے۔‘

*ایپل کمپنی الیکٹرک کار بنا رہی ہے: ٹیسلا

*ایپل کی گاڑی کے حوالے سے دستاویزات ’افشا‘

گذشتہ ہفتے یہ اطلاع سامنے آئی تھی کہ ایپل نے الیکٹرک گاڑیاں بنانے والی کمپنی ٹیسلا کے نائب صدر برائے وہیکل انجینیئرنگ اور آسٹن مارٹن کے چیف انجینیئر کرس پورٹ کی خدمات حاصل کی ہیں۔

یہ خیال کیا جا رہا ہے کہ وہ اپیل کی گاڑی کے منصوبے ’ٹائٹن‘ پر کام کریں گے۔

رواں برس کے آغاز میں ٹیسلا کے مالک ایلون مسک نے بھی کہا تھا کہ یہ کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں ہے کہ ٹیکنالوجی کی دنیا میں سب سے معروف کمپنی ایپل بھی ان کے مقابلے میں الیکٹرک گاڑی بنا رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Apple Computer

خیال رہے کہ ایپل کی جانب سے گاڑی بنانے کا باقاعدہ اعلان نہیں کیا گیا ہے۔ تاہم انھوں نے حال ہی میں گاڑیوں سے متعلق کئی انٹرنیٹ ڈومین جیسے کہ apple.car اور apple.auto رجسٹر کروائے ہیں۔

مارک فیلڈز نے کہا کہ فورڈ ایسی ’خودمختار‘ گاڑیوں پر کام کرنے کا ارادہ رکھتی ہے جو خود بخود چل سکیں اور وہ اس کے علاوہ ٹیکنالوجی کے میدان میں معروف کمپنیوں کے ساتھ مل کر یہ بھی جائزہ لے رہی ہے کہ لوگوں کا اپنی گاڑیوں سے تعلق کیسا ہے۔

تاہم انھوں نے اس خیال کو رد کیا کہ ان کی کمپنی گوگل کے لیے گاڑیاں بنانے میں دلچسپی رکھتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ فورڈ ’کانٹریکٹ مینیوفیکچرر‘ نہیں ہے لیکن انھوں نے یہ بھی کہا کہ ان کی کمپنی گوگل اور دیگر ٹیکنالوجی کمپنیوں کے ساتھ مل کر مشترکہ منصوبوں پر ضرور کام کر سکتی ہے۔

خیال رہے کہ گوگل کی خود کار گاڑی کے منصوبے کے سربراہ کرس آرمسن نے گذشتہ برس اس عزم کا اظہار کیا تھا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ اگلے پانچ برس میں یہ ٹیکنالوجی سڑکوں پر ہو۔

گوگل کی جانب سے رواں برس جاری کی گئی رپورٹ کے مطابق اپریل سنہ 2015 سے لے کر نومبر سنہ 2015 تک اس کی خودکار گاڑیوں نے بنا کسی حادثے کے 230,000 میل کا سفر طے کیا تھا۔

اسی بارے میں