سگریٹ کی پیکنگ کے سخت قوانین کے حق میں فیصلہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یورپ میں ہر برس سات لاکھ افراد تمباکو نوشی سے متعلقہ بیماریوں کا شکار ہو کر مر جاتے ہیں

یورپی عدالت انصاف میں سگریٹ نوشی کے نئے قوانین کے حق میں فیصلہ آنے کے بعد اب سگریٹ کی پیکنگ میں نمایاں تبدیلی کے قواعد کا نفاذ ہونے جا رہا ہے۔

یورپ کی اعلیٰ عدالت نے اس قانون کو قائم رکھا ہے جس میں سگریٹ کے پیکٹ کو صحت کے حوالے سے معیاری بنایا جائے گا اور ای سگریٹ کی تشہیر پر پابندی ہو گی۔

یورپی عدالتِ انصاف کے مطابق سگریٹ کی پیکنگ سے متعلق قوانین حدود سے تجاوز نہیں کرتے اور یہ مناسب اور ضرورت کے مطابق ہے۔

نئے قواعد و ضوابط کے تحت سگریٹ کے پیکٹ کے سامنے اور عقبی حصے کے 65 فیصد حصے پر صحت کے بارے میں تنبیہی پیغام درج ہو گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ای سگریٹ کی تشہیر پر پابندی ہو گی

نئے قوانین کا اطلاق رواں ماہ کی 20 تاریخ سے ہو گا تاہم نئے قوانین کے تحت تیار کیے گئے سگریٹ پیکٹ اس وقت تک فروخت نہیں ہوں گے جب تک پہلے سے تیار کردہ پیکٹ فروخت نہیں ہو جاتے۔

تمباکو نوشی کے بارے میں قانون سازی کو فلپ مورس انٹرنیشنل اور برٹش امریکن ٹوبیکو نے چیلنج کیا تھا۔

قانون کے خلاف ان کمپنیوں نے استدعا کی تھی کہ یورپی یونین اپنے رکن ممالک میں اس قانون کو رائج کرنے میں اپنے اختیارات سے تجاوز کر رہی ہے۔

اس وقت یورپی یونین کے رکن ممالک اپنے طور پر سگریٹ کی پیکنگ کے بارے میں قانون سازی پر کام کر رہے ہیں۔

Image caption تنبیہی پیغام واضح طور پر پیکٹ کے 65 فیصد حصے پر شائع ہو گا

برطانیہ میں حکومت اس بات پر غور کر رہی ہے کہ سگریٹ کے ایسے پیکٹ متعارف کرائے جائیں جن پر برانڈنگ نہیں ہو گی یعنی اس پر سگریٹ کا نام وغیرہ درج نہیں ہو گا۔

اس قانون کا اطلاق رواں ماہ سے شروع ہونا تھا تاہم اس میں تاخیر ہو سکتی ہے کیونکہ سگریٹ تیار کرنے والی کمپنیوں نے اسے ہائی کورٹ میں چیلنج کر رکھا ہے اور اس پر 18 مئی کو فیصلہ آئے گا۔

خیال کیا جا رہا ہے کہ مقدمہ ہارنے والا فریق ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل کر سکتا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ یورپ میں ہر برس سات لاکھ افراد تمباکو نوشی سے متعلقہ بیماریوں کا شکار ہو کر مر جاتے ہیں۔

اسی بارے میں