آئس لینڈ میں پرندوں کو بچانے کے لیے رنگین سڑکیں

تصویر کے کاپی رائٹ RUV

مغربی آئس لینڈ میں ماہرین حیاتیات کے خیال میں سڑکوں کو رنگ کرنے سے قطب شمالی سے آنے والے پرندوں کو گاڑیوں سے ٹکرا کر مرنے سے بچایا جا سکتا ہے۔

سرکاری نشریاتی ادارے آر یو وی کے مطابق سائنسدانوں نے جزیرہ نما سنیفلنیس میں سڑک کے ایک طویل حصے پر سرخ، زرد اور سفید رنگ کیا ہے تاکہ قطب شمالی سے آنے والے پرندیں سڑک پر نہ بیٹھ سکیں۔

یہ علاقہ بڑی تعداد میں آنے والے پرندوں کا گھر سمجھا جاتا ہے۔

حیاتیات کی طالب علم حنا کرسٹرن جانزڈاٹر نے نشریاتی ادارے کو بتایا کہ کم عمر پرندوں کو ٹریفک سے زیادہ خطرہ ہوتا ہے کیونکہ وہ سڑک کی گرم سطح کی جانب جلد راغب ہوتے ہیں۔ کم عمر پرندے جن کے پروں پر بھورے رنگ کے دھبے ہوتے ہیں آسانی سے سڑک کے سیاہ رنگ سے دھوکہ کھا جاتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

ایک رپورٹ کے مطابق جیسے جیسے سیاحوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے ویسے ہی اس علاقے کی سڑک پر بھی ٹریفک بڑھتی جائے گی۔

ماہر حیاتیات کرسٹین اولیفر کرسٹینسن کا کہنا ہے کہ سڑک پر رنگ کرنے کا منصوبہ کچھ ایسا ہے کہ ابتدائی طور پر یہ دیکھنے کی کوشش کی جائے گی کہ اس بار موسم گرما میں پرندوں کا اس رنگین سڑک پر ردعمل کیا ہوگا، اور اگر یہ منصوبہ کامیاب ہوگیا تو اسے ملک کے دیگر حصوں تک پھیلا دیا جائے گا۔

قطب شمالی سے آنے والے پرندے چھوٹے ہوتے ہیں اور ان کا وزن صرف سو گرام تک ہوتا ہے اور یہ پرندے ہرسال اپنی غیرمعمولی نقل مکانی کے لیے جانے جاتے ہیں۔

اسی بارے میں