’اردو تھیسارس‘: مترادف الفاظ کا آن لائن ذخیرہ

تصویر کے کاپی رائٹ urduthesaurus

اردو لکھنے اور پڑھنے والوں کو بعض اوقات ایک ایسی آزمائش کا سامنا کرنا پڑتا ہے جب وہ کسی لفظ کا مطلب یا اس کا مناسب متبادل لفظ جاننے کے لیے کئی لغات کا سہارا لیتے ہیں۔

لاہور میں مقیم مصنف اور مترجم مشرف علی فاروقی کو ابھی اسی آزمائش کا سامنا رہا تاہم انھوں نے اس مشکل کا حل ایک ایپلی کیشن کی صورت میں پیش کیا ہے۔

مشرف علی فاروقی نے حال ہی میں اردو الفاظ کے مترادف الفاظ کا ذخیرہ جمع کر کے ایک ایپلی کیشن اور ویب سائٹ پر ’اردو تھیسارس‘ کا ایک آزمائشی ورژن انٹرنیٹ اور موبائل فون کے لیے جاری کیا۔

انھوں نے بی بی سی اردو سروس سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ انھوں نے یہ کام پانچ سال کی مدت میں کیا ہے اور تاحال اس پر مزید کام جاری ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Urdu Thesaurus
Image caption اردو تھیسارس ایپلی کیشن میں تحریر اردو کے ’نسخ‘ رسم الخط ہے

خیال رہے کہ اردو زبان میں ایک لفظ کے معنی ایک سے زیادہ الفاظ سے ادا ہوسکتے ہیں یعنی وہ الفاظ جو ایک دوسرے کا متبال ہوں یا اپنے معنی میں یکساں یا ایک دوسرے سے قریب ہوں مترادفات کہلاتے ہیں۔

مشرف علی فاروقی اردو ادب میں کلاسیک کا درجہ رکھنے والی تصانیف کے اردو سے انگریزی میں تراجم کر چکے ہیں جن میں داستان امیر حمزہ اور طلسم ہوش ربا قابل ذکر ہیں۔

مشرف علی فاروقی کا کہنا ہے کہ ’جب سے میں نے کلاسیکی ادب کے تراجم کا کام شروع کیا ہے اس سے زندگی عذاب ہوگئی تھی کیونکہ ان میں جو اصطلاحات ہیں ان کے متبادل الفاظ کہیں ملتے ہی نہیں اور اس کے لیے آپ کو کئی لغات سے مدد لینا پڑتی ہے۔ اسی دوران میں نے سوچا کہ ان سب الفاظ اور اصطلاحات کا ایک آسان ذریعہ ہونا چاہیے۔ ‘

’برصغیر میں اردو لغات پر جتنا کام ہوا ہے شاید کہیں اور نہیں ہوا اور میرا خیال ہے کہ اگر یہ سارے لوگ آج کام کر رہے ہوتے تو شاید وہ بھی کسی الیکٹرانک ذریعے کا سہارا لیتے، یہیں سے میرے ذہن میں اس اپیلی کیشن کے خیال نے جنم لیا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Sharjeel Ahmad
Image caption مشرف علی فاروقی اردو ادب میں کلاسیک کا درجہ رکھنے والی تصانیف کے اردو سے انگریزی تراجم کر چکے ہیں

ان کا کہنا تھا کہ اس ایپلی کیشن میں ذخیرہ الفاظ تقریباً 40 ہزار ہے جبکہ 25 ہزار سے زائد مجموعہ مترادفات ہیں۔

’اردو تھیسارس کے موجودہ آزمائشی ورژن میں مترادفات کا تقریباً پچاس فیصد ذخیرہ موجود ہے اور اگلے مرحلے پر مزید ڈیٹا شامل کیا جائے گا۔‘

ان کا کہنا ہے کہ اس ایپلی کیشن اور ویب سائٹ پر مستقبل میں متضاد الفاظ، محاورے اور ضرب الامثال بھی شامل کیے جائیں گے۔

فی الحال یہ ایپلی کیشن اینڈرائیڈ اور ویب صارفین کے لیے ہے تاہم آئی فون کی ایپلی کیشن ابھی تیاری کے مرحلے میں ہے۔

اسی بارے میں