’آزادئ اظہار کو خدا غریق رحمت کرے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Thinkstock
Image caption پاکستان میں سائبر کرائمز کے حوالے سے اب تک کوئی جامع قانون موجود نہیں تھا اور الیکٹرانک ٹرانزیکشن آرڈیننس استعمال کیا جاتا تھا

متنازع سائبر کرائم بل قومی اسمبلی سے اکثریتِ رائے سے منظور ہو گیا ہے مگر کئی صارفین جو یہ خبر پڑھ رہے ہیں شاید ہی مکمل طور پر جانتے ہوں گے کہ اس بل میں کیا ہے اور یہ کس طرح ان کی زندگی پر اثر انداز ہو گا۔

اس کا اندازہ اس بات سے لگا لیں کہ بہت مشکل سے ایسی چند ٹویٹس اور اپ ڈیٹس ملے جن میں اس حوالے سے تبصرہ کیا گیا کیونکہ اس حوالے سے معلومات کی عام انٹرنیٹ صارفین میں شدید قلت ہے۔

٭ ’اب پاکستانی سوشل میڈیا سہما سہما رہے گا‘

٭ متنازع سائبر کرائم بل قومی اسمبلی سے بھی منظور

اب سے کچھ عرصہ قبل تک اس بل کی حقیقی کاپی تک عوام یا اس حوالے سے کام کرنے والی تنظیموں کی دسترس میں نہیں تھی نہ ہی اسے شیئر کیا گیا۔

متحدہ قومی مومنٹ کے رکن قومی اسمبلی سید علی رضا عابدی کے قومی اسمبلی میں بیان کو جاوید الرحمان نے ٹویٹ میں لکھا کہ ’فاختائیں اور کبوتر اب سائبر کرائم بل کی منظوری کے بعد وٹس ایپ اور وائبر کی جگہ لیں گے۔‘

علی رضا عابدی نے ٹویٹ کی کہ ’ایم کیو ایم نے اس بل کی مخالفت اظہارِ رائے کی آزادی اور بنیادی انسانی حقوق کی منافی ہونے کی بنیاد پر کی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption اس بل کے حوالے سے حکمران پاکستان مسلم لیگ نواز پر شدید تنقید کی جا رہی ہے جس نے اسے ’مشتبہ انداز‘ میں پاس کروایا

پی ٹی آئی کی مرکزی سیکرٹری انفارمیشن ڈاکٹر شیریں مزاری نے ٹویٹ کی کہ ’پی ٹی آئی کی پارلیمانی جماعت نے فیصلہ کیا کہ ہم اس بل کی موجودہ حالت میں مخالفت کریں گے جیسا کہ حزبِ اختلاف کی دوسری جماعتوں نے کی۔‘

انھوں نے مزید لکھا کہ ’کیونکہ اس بل کی بعض شقیں اب بھی بہت زیادہ قابلِ تشویش ہیں۔ اس کے بعض حصوں کی ضرورت تھی جبکہ بعض پر ہمارے تحفظات تھے۔‘

ثنااللہ طاہر لکھتے ہیں کہ ’میں اپنی تمام سابقہ ٹویٹس سے لاتعلقی کا اعلان کرتا ہوں۔‘

اس بل کے حوالے سے حکمران پاکستان مسلم لیگ نواز پر شدید تنقید کی جا رہی ہے جس نے اسے ’مشتبہ انداز‘ میں پاس کروایا۔

محمد ابوبکر نے لکھا ’جب بھیڑوں کا حکمران شیر ہو گا تو وہی ہو گا جو ہو رہا ہے۔‘

علی رعد نے لکھا ’تنقید جمہوریت کا حسن ہے مگر ہم ایک آئینی بادشاہت میں جی رہے ہیں۔‘

عبداللہ نجیب نے لکھا ’آزادئ اظہار کو خدا غریق رحمت کرے۔ پاکستان میں آزادئ اظہار کا واحد راستہ جو تھا اب اسے بند کر دیا گیا ہے۔‘

شیرزمان گل زمان نے ٹویٹ کی کہ ’نوجوان سائبر کرائم بل کا سب سے زیادہ نشانہ بنیں گے کیونکہ یہ ضروری نہیں ہے کہ عوام کو بتایا جائے کہ وہ کس طرح سوشل میڈیا کو استعمال کریں۔‘

اسی بارے میں