پانڈا کے معدوم ہونے کا خطرہ ٹل گیا

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

چین میں پانڈا کی نسل کے تحفظ کے لیے دہائیوں سے جاری کام کے باعث اب پانڈا کی نسل معدوم ہونے کے خطرے کا شکار جانوروں کی فہرست سے نکل آئی ہے۔

چینی حکام کے مطابق سب سے زیادہ چاہے جانے والے اس جانور کی آبادی میں اضافے کے باعث پانڈا کے ناپید ہونے کا امکان تو اب نہیں رہا لیکن یہ اب بھی خطرے کا شکار ضرور ہے۔

* دیوقامت پانڈے کے ہاں جڑواں بچوں کی پیدائش

اس تبدیلی کا اعلان انٹرنیشنل یونین فار کنزرویشن آف نیچر (آئی یو سی این) کی فہرست کی تازہ فہرست کی تیاری کے دوران کیا گیا۔

پانڈا چین کا قومی جانور ہے اور اس کی ختم ہوتی تعداد کو برسوں سے جاری کوششوں کے تحت بڑھایا ہے۔ تازہ اعداد و شمار کے مطابق اس وقت بالغ پانڈا کی تعداد 1864 ہو گئی ہے۔

ابھی ننھے پانڈا بچوں کی اصل تعداد تو معلوم نہیں لیکن ایک اندازے کے مطابق انھیں ملا کر چین میں اس وقت کل 2060 پانڈا ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

تاہم آئی یو سی این نے خبردار کیا ہے کہ یہ بہتری وقتی بھی ہو سکتی ہے۔ ماحولیاتی تبدیلیوں سے آئندہ 80 برسوں میں پانڈا کی بانسوں سے بنی ایک تہائی قدرتی قیام گاہیں ختم ہونے کا اندیشہ ہے۔

رپورٹ کے مطابق ایسے میں چین کی دو دہائی کی محنت سے حاصل کی گئی یہ کامیابی زوال کا شکار ہو سکتی ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ’اس مثالی مخلوق کی بچانے کے لیے یہ ضروری ہے کہ جنگلات کے تحفظ کے لیے اقدامات کیے جائیں۔‘

لیکن اس تازہ فہرست میں ایک بری خبر بھی ہے مشرقی گوریلا کی نسل جو کہ دنیا کا سب سے بڑا بندر ہے اب خطرے کا شکار ہے۔

آئی یو سی این کی خطرے کا شکار جانداروں کی فہرست میں 82954 شامل ہیں جن میں جانور بھی ہیں اور پودے بھی۔ ان میں سے ایک تہائی 23928 کو ناپید ہونے کے خطرے سے دوچار قرار دیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption مشرقی گوریلا کی نسل اب ناپید ہونے کے خطرے کا شکار ہے

اسی بارے میں