امراض کے خلاف مارک زکربرگ کا تین ارب ڈالر عطیے کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ facebook.comzuck
Image caption زکربرگ اور ان کی اہلیہ پریسیلا چن نے بیٹی کی پیدائش پر کمپنی میں اپنے 99 فیصد شیئرز فلاحی کاموں کے لیے عطیہ کرنے کا اعلان کیا تھا

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ فیس بک کے بانی مارک زکربرگ اور ان کی اہلیہ پریسیلا چن نے اگلے دس برس میں طبی شعبے میں تحقیق کے لیے تین ارب ڈالر امداد دینے کا اعلان کیا ہے۔

٭ بیٹی کی پیدائش پر فیس بک کے 99 فیصد حصص فلاحی کاموں کے لیے وقف

سان فرانسسکو میں پریس کانفرنس سےخطاب کرتے ہوئے مارک زکربرگ کی اہلیہ کا کہنا تھا کہ ان کا مقصد رواں صدی کے خاتمے تک تمام بیماریوں کا علاج، ان سے بچاؤ اور کنٹرول کرنے کے لیے اقدام کرنا ہے۔

یہ فنڈ چن زکربرگ نامی ادارے کی جانب سے تقسیم ہو گا جس کی بنیاد مسٹر اینڈ مسز زکربرگ نے دسمبر 2015 میں رکھی تھی۔

خیال رہے کہ ٹیکنالوجی کی دنیا میں راج کرنے والی شخصیات صحت کے شعبے کی جانب توجہ دے رہی ہیں۔

رواں ہفتے کے آغاز میں ہی مائیکروسافٹ نے کینسر کے علاج کے لیے مصنوعی انٹیلیجنس کے اوزار استعمال کرنے کا ارادہ ظاہر کیا تھا۔

ادھر گوگل کا ایک یونٹ این ایچ ایس کے ساتھ ملکر اس کوشش میں ہے کہ کمپیوٹر کے ذریعے امراض کی تشخیص مزید درست انداز میں کرنے کے لیے کوشاں ہے۔

مسز چن زکربرگ کا کہنا تھا کہ وہ پہلے ہی ریسرچ سینٹر جس کا نام بائیو حب ہو گا کے لیے 60 ملین دینے کا پہلے ہی وعدہ کر چکی ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ بائیو حب ابتدا میں دو منصوبوں پر کام کرے گا۔

جس میں پہلا تو جسم کے اہم اعضا کو کنٹرول کرنے والے خلیوں کے بارے میں جاننا اور دوسرا ایچ آئی وی، ایڈز، ایبولا اور ذیکا وائرس اور دیگر نئے امراض کے علاج کے لیے نئے ٹیسٹ اور ویکسین بنانے کے لیے ہوگا۔

مارک زکر برگ نے یہ بھی پیش گوئی کی کہ 22ویں صدی میں اوسط عمر 100 سے زائد ہوگی۔

تاہم ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس فنڈ کے ذریعے طریقہ علاج اور مریضوں کے اس میں اپلائی کرنے میں سالوں لگ سکتے ہیں۔

بل گیٹس ک جانب سے بھی مارکزکربرگ اور ان کی اہلیہ کے اس اعلان کی تعریف کی گئی ہے۔

زکربرگ اور ان کی اہلیہ پریسیلا چن نے بیٹی کی پیدائش پر کمپنی میں اپنے 99 فیصد شیئرز فلاحی کاموں کے لیے عطیہ کرنے کا اعلان کیا تھا جن میں مالیت 45 ارب ڈالر بتائی گئی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں