’60 فیصد غیر محفوظ گلیکسی نوٹ سیون تبدیل کر لیے گئے‘

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption عالمی سطح پر فون واپس منگوانے سے سام سنگ کی 10 منڈیاں متاثر ہوئی ہیں

سام سنگ سمارٹ فون گلیکسی نوٹ سیون کی بیٹریوں میں خرابی کے باعث کمپنی کی جانب سے اسے واپس لینے کے اعلان کے بعد اس کے 60 فیصد صارفین نے اسے تبدیل کرلیا ہے۔

امریکہ اور جنوبی کوریا میں اس ماڈل کے بعض فونز کی بیٹری چارج ہونے کے دوران یا اس کے بعد پھٹنے کی اطلاعات سامنے آئی تھیں جس کے بعد کمپنی نے فون کو واپس لینے کا اعلان کیا تھا۔

٭ سام سنگ: نوٹ 7 کی چارجنگ محدود کرنے کا فیصلہ

٭ ’گلیکسی نوٹ سیون تبدیل کر لیں یا استعمال نہ کریں‘

دو ستمبر کو سام سنگ کی جانب سے بیان جاری کیا گیا تھا کہ اب تک دنیا بھر میں 25 لاکھ کی تعداد میں فروخت ہو جانے والے اس ماڈل میں یہ تعین کرنا کہ ان میں سے کون سے فونز میں خرابی ہے ایک مشکل کام ہے۔ لہذا کمپنی نے اس کی فروخت روک دی تھی۔

سام سنگ کا کہنا ہے کہ فون تبدیل کرنے والے 90 فیصد صارفین نے اسی ماڈل کا ایک اپ ڈیٹڈ ورژن حاصل کیا ہے۔

سام سنگ کا کہنا ہے کہ انھوں نے اپنے سپلائیرز کے ساتھ یہ معاملہ طے کرتے ہوئے اس بات کو یقنی بنایا ہے کہ متبادل فونز انتہائی اعلیٰ کے معیار ہوں اور معیار کے حوالے سے مکمل یقین دہانی کی جائے گی۔

یہ فون 28 اکتوبر کو فروخت کے لیے دوبارہ پیش کیا جائے گا اہم اس کا انحصار پرانے فون تبدیل کیے جانے کا عمل پورا ہونے پر ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption حالیہ دنوں میں نوٹ سیون کے پھٹنے کے مزید واقعات سامنے آئے ہیں

رواں ماہ ہی سام سنگ نے نوٹ سیون کی بیٹریوں کے چارج ہونے کی صلاحیت 60 فیصد کرنے کا اعلان کیا تھا۔

سام سنگ الیکٹرانکس یورپ کے چیف مارکیٹنگ آفیسر ڈیوڈ لویس کا کہا ہے کہ ’سب سے پہلے تحفظ کے حوالے سے ہمارا پیغام گلیکسی نوٹ سیون کے مالکان تک پہنچ رہا ہے، جو اس کے بدلے میں جلداز جلد نیا فون لے کر صحیح کر رہے ہیں۔‘

نوٹ سیون کی بیٹریوں میں خرابی کے باعث کمپنی نے اسے واپس لینے کا اعلان کیا تھا۔ اس ماڈل کے بعض فونز کی بیٹری چارج ہونے کے دوران یا اس کے بعد پھٹ گئی تھی اور ان واقعات کے سامنے آنے کے بعد کمپنی نے فون کو واپس لینے کا اعلان کیا تھا۔

عالمی سطح پر فون واپس منگوانے سے سام سنگ کی 10 منڈیاں متاثر ہوئی ہیں۔ جنوبی کوریا میں پہلے ہی دو لاکھ صارفین فون واپس کر چکے ہیں۔

حالیہ دنوں میں نوٹ سیون کے پھٹنے کے مزید واقعات سامنے آئے ہیں۔

نیویارک پوسٹ کے مطابق بروکلین میں ایک چھ سال کے بچے کا ہاتھ اس وقت جل گيا جب فون اس کے ہاتھ میں پھٹ گيا۔ اسے ہسپتال لے جایا گیا اور اب وہ بہتر ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں