BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Saturday, 07 February, 2009, 15:03 GMT 20:03 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
ڈوپنگ ماہر کی پاکستان آمد
 

 
 
محمد آصف
محمد آصف دو مرتبہ ممنوعہ ادویہ کے استعمال کے مرتکب پائےگئے
پاکستانی کرکٹرز کو ڈوپنگ کے معاملات میں آگاہی دینے کے لیے آئی سی سی کی ڈوپنگ کی ماہر خاتون گیارہ فروری کو لاہور پہنچ رہی ہیں۔

لورینڈا رگلس نامی یہ خاتون پاکستان کے ان تمام کھلاڑیوں کو جو پاکستان کرکٹ بورڈ کے سنٹرل کنٹریکٹ میں ہیں ورلڈ ڈوپنگ ایجنسی کے قوانین پر لیکچرز دیں گی۔

لورینڈا بارہ فروری کو پاکستان میں واڈا کے حکام سے بھی ملاقات کریں گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ڈاکٹر سہیل سلیم کا کہنا ہے کہ ڈوپنگ ماہر کی آمد آئی سی سی کے اپنے رکن ممالک کے کھلاڑیوں کو ڈوپنگ کے بارے میں آگاہی دینے کے ایک جاری پروگرام کا حصہ ہے اور اپنے قیام کے دوران یہ خاتون پاکستانی کھلاڑیوں کو ممنوعہ ادویات اور ان پر پابندی کے بارے میں آگاہ کریں گی۔

آئی سی سی کے نئے ضابطہ اخلاق کے مطابق اب کرکٹ کی یہ سپریم باڈی نہ صرف آئی سی سی کے اپنے ایونٹس بلکہ کسی بھی بین الاقوامی کرکٹ میچ کے دوران کھلاڑیوں کے اچانک ڈوپ ٹیسٹ لے سکتی ہے۔

اس تناظر میں دیکھا جائے تو ڈوپنگ کے سلسلے میں ہونے والا یہ تربیتی کورس پاکستانی کرکٹرز کے لیے بہت فائدہ مند ہوگا۔ پاکستان کے دو فاسٹ بالرز محمد آصف اور شعیب اختر کو سنہ 2006 میں مثبت ڈوپ ٹیسٹ پر ایک سال اور دو سال پابندی کی سزا ملی تھی اور بعد ازاں انہیں صرف اس لیے اس الزام سے بری کر دیا گیا کہ انہیں ان ممنوعہ ادویات کے بارے میں معلومات نہیں تھیں۔

محمد آصف گزشتہ برس ایک بار پھر اس مسئلے میں الجھ گئے جب انڈیا میں ہونے والے انڈین پریمیئر لیگ ٹوئنٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ میں محمد آصف کا ڈوپ ٹیسٹ ایک بار پھر مثبت پایا گیا۔

 
 
اسی بارے میں
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد