دبئی ٹیسٹ: ویسٹ انڈیز نے چھ وکٹوں کے نقصان پر 315 رنز بنائے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سیمیولز اور براوو ویسٹ انڈیز کی جانب سے وکٹ سنبھالے ہوئے ہیں

دبئی میں پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن کے اختتام پر پاکستان کے 579 رنز کے جواب میں ویسٹ انڈیز نے پہلی اننگز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 315 رنز بنائے تھے۔

تیسرے روز کے اختتام پر ویسٹ انڈیز کی جانب سے اس وقت ڈورچ 24 اور ہولڈر صفر پر کریز پرموجود تھے۔

تفصیلی سکور کارڈ

دبئی میں ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کا پہلا روز تصاویر میں

دبئی ٹیسٹ کے پہلے دن پاکستان کی عمدہ بیٹنگ، ایک وکٹ پر 279 رنز

سنیچر کو ویسٹ انڈیز نے 69 رنز ایک کھلاڑی آؤٹ سے اپنی پہلی اننگز کا دوبارہ آغاز کیا تو کریگ بریتھویٹ 32 رنز بنا کر یاسر شاہ کی گیند پر کلین بولڈ ہوگئے۔

سیمیولز اور براوو نے مل کر چوتھی وکٹ کی شراکت میں 103 رنز بنائے۔ سیمیولز کو 76 رنز پر سہیل نے ایل بی ڈبلیو کیا۔

پانچویں وکٹ کی شراکت میں براوو اور بلیک وڈ نے 77 رنز کا اضافہ کیا۔ تاہم پاکستان کو چوتھی کامیابی اس وقت حاصل ہوئی جب وہاب ریاض نے بلیک وڈ کو آؤٹ کیا۔ بلیک وڈ 37 رنز بنا سکے۔

پاکستان کو جلد ہی ایک اور کامیابی وہاب ریاض نے دلوائی جب انھوں نے چیز کو چھ رنز پر آؤٹ کیا۔

پاکستان کو بڑی کامیابی محمد نواز نے دلوائی جب انھوں نے براوو کو 87 کے انفرادی سکور پر آؤٹ کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان کی جانب سے ابتدائی وکٹیں یاسر شاہ نے حاصل کیں

اس سے قبل جمعے کے روز دبئی میں پاکستان کی تاریخ کے 400 ویں میچ میں اظہر علی نے ویسٹ انڈیز کے خلاف شاندار بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 300 رنز بنائے اور ناقابلِ شکست رہے تھے۔

پاکستان نے تین وکٹوں کے نقصان پر 579 رنز پر اننگز ڈیکلیئر کر دی تھی اور جواب میں ویسٹ انڈیز نے دوسرے دن کے اختتام پر ایک وکٹ کے نقصان پر 69 رنز بنائے ۔

پاکستان کو پہلی کامیابی سپنر یاسر شاہ نے دلائی جنھوں نے جانسن کو 15 رنز پر ایل بی ڈبلیو آؤٹ کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اظہرعلی نے 469 گیندوں پر 302 رنز کی یادگار اننگز کھیلی جس میں 23 چوکے اور دو چھکے شامل تھے

اس سے پہلے اظہرعلی نے 469 گیندوں پر 302 رنز کی یادگار اننگز کھیلی جس میں 23 چوکے اور دو چھکے شامل تھے۔ وہ ڈے نائٹ کرکٹ کی تاریخ میں پہلی سینچری، پہلی ڈبل سینچری اور پہلی ٹرپل سینچری بنانے والے کھلاڑی بن گئے ہیں۔

وہ حنیف محمد، انضمام الحق اور یونس خان کے بعد ٹرپل سینچری بنانے والے چوتھے پاکستانی بلےباز بن گئے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں