فٹبال میچ میں نعرے بازی اور جشن پر پابندی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption تھائی لینڈ کے عوام سے کہا گیا ہے کہ وہ کالے کپڑے پہنیں اور جشن منانے سے پرہیز کریں

تھائی لینڈ اور آسٹریلیا میں حکام نے فٹبال ورلڈ کپ کے آئندہ ماہ ہونے والے کوالیفائنگ میچ میں شائقین کی جانب سے نعرے لگانے پر پابندی لگا دی ہے۔ پابندی کی وجہ اسی ماہ تھائی لینڈ کے بادشاہ پومی پون کی وفات ہے۔

دونوں ممالک کی فٹبال اسوسی ایشنز نے شائقین کو تجویز بھی کی ہے وہ سفید، کالے، یا گرے رنگ کے کپڑے پہنیں۔

تھائی لینڈ میں عوام ایک سال کا قومی سوگ منا رہے ہیں۔ اس سال ملک کے 88 سالہ بادشاہ پومی پون انتقال کر گئے تھے۔ پومی پون 70 برس تک تھائی لینڈ کے بادشاہ رہے تھے۔

تھائی لینڈ کے عوام سے کہا گیا ہے کہ وہ روزمرہ طور پر بھی کالے کپڑے پہنیں اور جشن منانے سے پرہیز کریں۔

تھائی لینڈ کی فٹبال اسوسی ایشن نے 15 نومبر کو متوقع اس میچ کی تاریخ تبدیل کرنے کی درخواست کی تھی تاہم آسٹریلوی حکام نے اس میچ کو مقررہ تاریخ پر ہی منعقد کرنے کے لیے کہا۔

فٹبال اسوسی ایشن کی ویب سائٹ پر جاری کیے جانے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ اس موقعے پر بینر، جھنڈے، اور میگا فون ممنوع ہوں گے اور سٹیڈیم سمیت آس پاس کے علاقوں میں جشن کی اجازت نہیں ہوگی۔

تھائی لینڈ کے بادشاہ پومی پون دنیا میں طویل ترین عرصے تک بادشاہ رہنے والے فرماں روا تھے جنہوں نے اپنے ستر سال دورہ اقتدار میں بہت سے سیاسی بحرانوں سے ملک کو نکالا۔

تھائی لینڈ میں سرکاری حکام کا کہنا ہے کہ ولی عہد شہزادہ وجیرالانگکورن چاہتے ہیں کہ ان کی تاج پوشی کی تقریب کم از کم ایک سال کی تاخیر سے کی جائے۔

خیال رہے کہ بادشاہ پومی پون کے جانشین 64 سالہ ولی عہد شہزادہ وجیرالونگکورن کو عوام میں وہ پذیرائی حاصل نہیں جو ان کے والد کو تھی۔

تھائی لینڈ کے قوانین کے مطابق عوامی سطح پر جانشینی کے معاملات پر بات کرنا قابل تعزیر جرم ہے۔

اسی بارے میں