’پاکستانی کرکٹرز کے پُش اپس لگانے پر کوئی پابندی نہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption اس سے قبل مقامی میڈیا میں یہ خبریں گردش میں تھیں کہ پی سی بی نے میچ میں فتح کے بعد کھلاڑیوں کے پُش اپس لگانے پر پابندی عائد کر دی ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ کی ایگزیکٹو کمیٹی کے چیئرمین نجم سیٹھی نے کھلاڑیوں کے پُش اپس پر پابندی سے متعلق خبروں کو مسترد کر دیا ہے۔

نجم سیٹھی نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پہ لکھا 'اوہ خدا کے واسطے، پُش اپس پر کوئی پابندی نہیں ہے۔ درحقیقت میرا خیال ہے کہ کھلاڑیوں کو سنچری بنانے کے بعد 100 پُش اپس کرنے چاہئیں۔'

یونس خان آئی سی سی ٹیسٹ درجہ بندی میں دوسرے نمبر پر

سپنرز ہماری قوت ہیں جو میچ جتوا رہے ہیں: مصباح الحق

بزرگوں کا ساتھ چھوٹتے ہی کشتی ڈولنے نہ لگے!

پی سی بی کے میڈیا ڈائریکٹر امجد حسین بھٹی نے بی بی سی کو بتایا 'پی سی بی نے پُش اپس پہ کوئی پابندی نہیں لگائی۔ بدھ کو ہونے والے اجلاس میں بعض اراکینِ پارلیمان نےصرف یہ پوچھا تھا کہ پُش اپس کے پیچھے کیا مقصد ہے جس پر انھیں بتایا گیاکہ کاکول اکیڈمی سے تربیت حاصل کرنے کے بعد وعدے کے مطابق لارڈز کے میدان میں پُش اپس لگائےگئے۔'

واضح رہے کہ اس سے قبل مقامی میڈیا پر یہ خبریں گردش میں تھیں کہ پی سی بی نے میچ میں فتح کے بعد کھلاڑیوں کے پُش اپس لگانے پر پابندی عائد کر دی ہے اور یہ فیصلہ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے بین الصوبائی رابطہ کے حکومتی اراکین کی جانب سے کھلاڑیوں کے پُش اپس پراعتراضات کے بعد کیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Social media

نجم سیٹھی نے خبروں کے بعد کی جانے والی ٹوئٹ میں لکھا تھا:’سجدہ یا پُش اپس وغیرہ کھلاڑی اپنی صوابدید پر کرتے ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ آرمی کی فِٹنس ٹریننگ کی سہولیات کی تعریف کرتا ہے جسے چھ سال میں تین دفعہ استعمال کیا جاتا ہے۔ میڈیا پاکستان کرکٹ ٹیم کو سیاسی رنگ دینے سے پرہیز کرے۔'

پی سی بی کے اس فیصلے پر مختلف حلقوں کی جانب سےحیرانی کا اظہار کیا گیا۔

سابق کرکٹر محسن خان نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے سوال کیا کہ پی سی بی کے چیئرمین تو شہریارخان ہیں۔ نجم سیٹھی نے اس کا فیصلہ کس حیثیت میں کیا؟

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption مصباح الحق نے انگلینڈ کے لارڈز کرکٹ گراؤنڈ پر پہلے ٹیسٹ میچ میں شاندار سنچری کے بعد سیلیوٹ کر کے 10 پُش اپس لگائے تھے

محسن خان کا کہنا تھا 'جب ہم کھیلا کرتے تھے اور ہم سے پہلے بھی ایسا ہوتا تھا کہ کھلاڑی کھیل سے پہلے اور اُس کے دوران پُش اپس لگایا کرتے تھے۔ البتہ حال میں لارڈز کےمیدان میں ایسا لگا کہ پُش اپس لگا کر کچھ لڑکوں نےشو آف بھی کیا۔ ایسا کرنے کی ضرورت نہیں تھی۔اگر وہ آرٹی ٹریننگ کیمپ کو وہ سراہ رہے تھےتو مجھے اُس میں کوئی غلطی نہیں لگتی۔'

انھوں نےدیگر کھلاڑیوں کاحوالہ دیتے ہوئے کہا 'کرکٹ میں جیتنے کے بعد دوسری ٹیموں کو نیچا دکھانے کے لیے بڑی بڑی بدتمیزیاں اور بڑے بڑھ اشارے ہوتے ہیں اور یہ سب میں اپنے زمانے سے دیکھتا آ رہا ہوں اور اس سے پہلے بھی ہوا کرتا تھا تو اگر کھلاڑی خیر سگالی کے جذبے کے تحت پُش اپس لگاتے ہیں تو میں اسے بُرا نہیں سمجھتا۔'

واضح رہے کہ پاکستان کی ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق نے انگلینڈ کے لارڈز کرکٹ گراؤنڈ پر پہلے ٹیسٹ میچ میں شاندار سنچری کے بعد سیلیوٹ کر کے 10 پُش اپس لگائے تھے۔

مصباح کے ان پش اپس کا مقصد پاکستانی فوج کی جانب سے لگائے گئے تربیتی کیمپ میں فوجی ٹرینرز کی تربیت پر ان کو خراج تحسین پیش کرنا تھا۔

اسی بارے میں