شارجہ ٹیسٹ: پاکستان کی کلین سوئپ کی ہیٹ ٹرک پر نظر

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ’پاکستانی ٹیم کلین سوئپ کے لیے پرامید ہے اور اسے یقینی بنانے کے لیے پوری کوشش کی جائے گی‘

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان تیسرا اور آخری ٹیسٹ میچ اتوار سے شارجہ کرکٹ سٹیڈیم میں شروع ہو رہا ہے اور پاکستان کی نظریں ایک اور کلین سوئپ پر لگی ہوئی ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان ویسٹ انڈیز کو ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے سیریز میں وائٹ واش کر چکا ہے۔

پاکستان نے دونوں ٹیموں کے درمیان جاری ٹیسٹ سیریز بھی اپنے نام کرلی ہے۔ اس نے دبئی میں کھیلا گیا پہلا ٹیسٹ 56 رنز سے اور ابوظہبی میں دوسرا ٹیسٹ 133 رنز سے جیتا تھا۔

کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ پاکستانی ٹیم کلین سوئپ کے لیے پرامید ہے اور اسے یقینی بنانے کے لیے پوری کوشش کی جائے گی۔ یہ ٹیسٹ بھی ان کے لیے بڑی اہمیت کا حامل ہے جسے جیتنے کی کوشش کریں گے۔

مصباح الحق کا کہنا ہے کہ ہر ٹیسٹ میچ میں جیت کی بہت زیادہ اہمیت ہوتی ہے قطع نظر اس بات کے کہ آپ کس ٹیم کے خلاف کھیل رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اصل اہمیت آپ کی اور آپ کی ٹیم کی کارکردگی کی ہوتی ہے، ریکارڈز کو ذہن میں نہیں رکھنا چاہیے۔

مصباح الحق سے جب شارجہ کی وکٹ کے بارے میں سوال کیا گیا تو انھوں نے کہا کہ یہ بہت مشکل سوال ہے جس کا جواب تو گراؤنڈزمین کو بھی نہیں آتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ امید ہے کہ شارجہ کی وکٹ ان کے بولرز کے لیے مددگار ثابت ہوگی تاہم یہ وکٹ روایتی طور پر آہستہ ہوتی ہے جس پر بہت زیادہ ٹرن نہیں ہوتا۔

شارجہ ٹیسٹ بحیثیت کپتان مصباح الحق کا 49 واں ٹیسٹ ہوگا اور اس طرح وہ پاکستان کی طرف سے سب سے زیادہ ٹیسٹ میچوں میں قیادت کرنے والے کپتان بن جائیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سپنرز نے دوسری ٹیسٹ میچ کی جیت میں اہم کردار ادا کیا

پاکستانی ٹیم ایک بار پھر اپنے فتح گر بولر یاسر شاہ سے دبئی اور ابوظہبی جیسی کارکردگی دوہرانے کی توقع رکھے ہوئے ہے جو دو ٹیسٹ میچوں میں سترہ وکٹیں حاصل کر چکے ہیں۔

ویسٹ انڈیز نے اس دورے میں جس مایوس کن کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے وہ غیرمتوقع نہیں تھی۔ اگرچہ پہلے ٹیسٹ میں ویسٹ انڈیز کی ٹیم ایک مرحلے پر بازی جیتنے کی پوزیشن میں بھی آئی تھی لیکن اب ایسا دکھائی دے رہا ہے جیسے اس کے کھلاڑی حوصلہ ہار چکے ہیں۔

شارجہ کرکٹ سٹیڈیم ون ڈے انٹرنیشنل میں پاکستانی ٹیم کا مضبوط گڑھ سمجھا جاتا ہے تاہم ٹیسٹ میچوں میں پاکستان نے اس میدان پر چار ٹیسٹ میچز جیتے ہیں اور تین میں اسے شکست ہوئی جبکہ ایک میچ برابر رہا ہے۔

شارجہ میں پاکستان نے ویسٹ انڈیز کے خلاف 2002 میں ٹیسٹ سیریز کھیلی تھی جس کے دونوں ٹیسٹ میچز میں پاکستان کامیاب رہا تھا۔

اسی بارے میں