سمتھ کی سینچری، پرتھ میں آسٹریلیا کی پاکستان پر سات وکٹوں سے فتح

سٹیون سمتھ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سٹیون سمتھ اپنے کریئر کی آٹھویں اور پاکستان کے خلاف دوسری سنچری مکمل کرنے میں کامیاب رہے

آسٹریلیا نے پانچ ایک روزہ کرکٹ میچوں کی سیریز کے تیسرے میچ میں پاکستان کو سات وکٹوں سے شکست دے کر سیریز میں دو ایک سے برتری حاصل کر لی ہے۔

پاکستان نے پرتھ میں کھیلے جانے والے میچ میں میزبان ٹیم کو فتح کے لیے 264 رنز کا ہدف دیا تھا جو سٹیون سمتھ اور ہینڈزکومب کی عمدہ بلے بازی کی بدولت آسٹریلیا نے 46ویں اوور میں حاصل کر لیا۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

تیسرے ایک روزہ میچ کی تصویری جھلکیاں

ہینڈزکومب نے 82 رنز کی اننگز کھیلی جبکہ سمتھ اپنے کریئر کی آٹھویں اور پاکستان کے خلاف دوسری سنچری مکمل کرنے میں کامیاب رہے اور دس چوکوں اور ایک چھکے کی مدد 108 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

آسٹریلیا کے اوپنرز ڈیوڈ وارنر اور عثمان خواجہ نے ٹیم کو 44 رنز کا آغاز دیا اور اس شراکت کا خاتمہ جنید خان نے وارنر کو پویلین بھیج کر کیا۔

اس کے اگلے ہی اوور میں محمد عامر نے عثمان خواجہ کو بھی پویلین کی راہ دکھا دی۔

اپنا پہلا میچ کھیلنے والے ہینڈزکومب کو صفر کے سکور پر جنید خان نے کیچ تو کروا دیا لیکن ان کی گیند امپائر کی جانب سے نو بال قرار دے دی گئی۔

ہینڈزکومب کو دوسرا موقع اس وقت ملا جب دس کے انفرادی سکور پر محمد نواز نے جنید خان کی ہی گیند پر ان کا کیچ ڈراپ کر دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ہینڈسکومب نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے نصف سینچری مکمل کی

ان مواقع کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ہینڈزکومب نے نصف سینچری مکمل کی اور 82 رنز بنا کر حسن علی کی پہلی وکٹ بنے۔

اس سے قبل آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی تو اس نے مقررہ 50 اوورز میں سات وکٹوں کے نقصان پر 263 رنز بنائے۔

پاکستانی اننگز کی خاص بات بابر اعظم کی عمدہ بیٹنگ رہی اور انھوں نے چار چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 84 رنز بنائے۔

انھوں نے اپنا 21واں ایک روزہ میچ کھیلتے ہوئے 1000 رنز بھی مکمل کر لیے۔

ایک روزہ کرکٹ میں تیز ترین 1000 رنز مکمل کرنے کا ریکارڈ مشترکہ طور پر سر ویوین رچرڈز، کیون پیٹرسن، جوناتھن ٹراٹ اور سٹیفن ڈی کاک کے پاس ہے اور اب فہرست میں بابر اعظم کا نام بھی شامل ہوگیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption بابر اعظم نے اپنا 21واں ایک روزہ میچ کھیلتے ہوئے اپنے 1000 رنز مکمل کیے ہیں

شرجیل خان نے آٹھ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے صرف 46 گیندوں پر اپنی نصف سینچری مکمل کی تاہم اگلی ہی گیند پر ہیڈ نے انھیں بولڈ کر دیا۔

اسد شفیق بھی صرف پانچ رنز بنا کر ہیڈ کا دوسرا شکار بنے۔

شعیب ملک اور بابر اعظم نے چوتھی وکٹ کی شراکت میں سکور میں 63 رنز کا تیزی سے اضافہ کیا تاہم شعیب ملک 39 کے انفرادی سکور پر سٹین لیک کی پہلی وکٹ بنے۔

عمر اکمل نے 39 رنز بنائے اور انھیں ہیزل ووڈ نے آؤٹ کیا جبکہ عماد وسیم نو رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔

آسٹریلیا کی جانب سے ہیزل ووڈ نے تین، ٹریوس ہیڈ نے دو، کمنز اور سٹین لیک نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شرجیل خان نے پاکستان کو عمدہ آغاز فراہم کیا

تیسرے ایک روزہ میچ کے لیے پاکستان نے وہی ٹیم میدان میں اتاری جس سے میلبرن میں کامیابی حاصل کی تھی جبکہ آسٹریلیا کی ٹیم میں دو تبدیلیاں کی گئیں اور مچل مارش اور مچل سٹارک کی جگہ ہینڈزکومب اور سٹین لیک کو ٹیم میں شامل کیا گیا۔

اس سیریز میں برسبن میں کھیلے گئے پہلے میچ میں آسٹریلیا نے پاکستان کو 92 رنز سے شکست دی تھی جبکہ پاکستان نے میلبرن میں دوسرے ایک روزہ میچ میں چھ وکٹوں سے فتح اپنے نام کی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں