دفاعی چیمپیئن جوکووچ کو غیر معروف کھلاڑی سے شکست

نوواک جاکووچ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption سنہ 2008 کے ومبلڈن مقابلوں کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ 29 سالہ جوکووچ دوسرے راؤنڈ میں کسی ٹورنامنٹ سے باہر ہوئے ہیں

دفاعی چیمپیئن نواک جوکووچ آسٹریلیں اوپن کے دوسرے راؤنڈ میں 117ویں رینکنگ کے کھلاڑی ڈینس ایسٹومین سے شکست کھا کر ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئے ہیں۔

ٹینس کی دنیا میں 117 ویں درجے پر براجمان ڈینس ایسٹومین نے چھ بار کے چیمپیئن نوواک جوکووچ کو چار گھنٹے اور 48 منٹ تک جاری رہنے والے میچ میں 6-7، 7-5، 6-2، 6-7، 5-7 اور 4-6 کے فرق سے شکست دی۔

نوواک جوکووچ ومبلڈن کے تیسرے راؤنڈ میں ہی ہار گئے

جوکووچ کو شکست، اینڈی مرے اٹالین اوپن کے فاتح

سنہ 2008 کے ومبلڈن مقابلوں کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ 29 سالہ جوکووچ کسی ٹورنامنٹ کے دوسرے راؤنڈ میں ہی باہر ہوئے ہیں۔

میچ ہارنے کے بعد جوکووچ کا کہنا تھا: ’بِلا شبہ ایسٹومین جیت کے مستحق تھے، انھوں نے اہم موقعوں پر اچھا کھیل پیش کیا۔'

جوکووچ کی حیران کن شکست کے بعد آسٹریلین اوپن کے تیسرے راؤنڈ میں پہنچنے والے برطانوی کھلاڑی اینڈی مرے اپنا پہلا آسٹریلین اوپن جیتنے کے لیے فیورٹ سمجھے جانے لگے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption اسٹومن سنہ 2012 کے ومبلڈن اور سنہ 2013 کے یو ایس اوپن مقابلوں میں میں کوارٹر فائنلز تک پہنچے تھے

مرے گذشتہ سات سالوں کے دوران آسٹریلین اوپن کے پانچ فائنلز ہار چکے ہیں جن میں انھیں جوکووچ نے چار بار شکست سے دوچار کیا تھا۔

گذشتہ سات سالوں کے دوران یہ دوسرا موقع ہے کہ جوکووچ کو ٹینس کی دنیا میں 100 درجے سے اوپر کے کسی کھلاڑی کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

ٹینس میں 145 درجے کے کھلاڑی جوان مارٹن ڈیل پورٹو نے جوکووچ کو 2016 کے ریو اولمپکس میں شکست دی تھی۔

دوسری جانب ایسٹومین کا کہنا تھا کہ ’یہ میرے کریئر کی سب سے بڑی فتح ہے اور میرے لیے بہت اہمیت رکھتی ہے۔ اب مجھے احساس ہو رہا ہے کہ میں ان جیسے کھلاڑیوں کے ساتھ کھیل سکتا ہوں۔'

جوکووچ کو شکست دینے سے پہلے ایسٹومین نے گذشتہ 33 میچوں میں ٹینس کی دنیا کے پہلے دس نمبروں پر براجمان کسی کھلاڑی کو پہلی بار شکست دی ہے۔

ایسٹومین سنہ 2012 کے ومبلڈن اور سنہ 2013 کے یو ایس اوپن مقابلوں میں کوارٹر فائنلز تک پہنچے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں