آندرے رسل پر ایک سال کی پابندی عائد، پی ایس ایل میں بھی شرکت سے محروم

آندرے تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption اس پابندی کا اطلاق 31 جنوری سے ہوگا

ویسٹ انڈیز کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر آندرے رسل کی جانب سے انٹی ڈوپنگ قوانین کی خلاف ورزی پر ان پر ایک سال کرکٹ کھیلنے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

28 سالہ آندرے رسل سنہ 2016 میں ویسٹ انڈیز کی ورلڈ ٹی 20 جیتنے والی ٹیم کا حصہ تھے اور پاکستان سپر لیگ میں اسلام آباد یونائیٹڈ کی نمائندگی کرتے ہیں۔

خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق ایک آزاد اینٹی ڈوپنگ ٹریبونل کے چیئرمین ہو فولکنر نے یہ فیصلہ سنایا ہے اور ان کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ آندرے رسل ڈوپنگ کے مرتکب پائے گئے ہیں۔

اس پابندی کا اطلاق 31 جنوری سے ہوگا۔

واڈا کے قوانین کے تحت آندرے رسل سے 2015 میں تین مرتبہ ٹیسٹ نہ کروانے پر قانون کی خلاف ورزی پر جواب طلب کیا گیا تھا اور وہ قوانین کے مطابق ٹیسٹ کرانے میں ناکام رہے تھے۔

ورلڈ اینٹی ڈوپنگ ایجنسی (واڈا) کے قوانین کے مطابق اگر کوئی کھلاڑی 12 ماہ کے عرصے میں تین مرتبہ بلانے پر بھی ٹیسٹ کے لیے حاضر نہ ہو تو اسے ڈوپ ٹیسٹ میں ناکام تصور کیا جاتا ہے

واڈا کے قوانین کے تحت دنیا بھر کے تمام کھلاڑیوں کو اپنی مقامی اینٹی ڈوپنگ ایجنسیوں کو اپنے مقام کے بارے میں بتانا ہوتا ہے تاکہ ان کا ڈرگ ٹیسٹ لیا جاسکے۔

خیال رہے کہ آندرے رسل پاکستان سپر لیگ کی ٹیم اسلام آباد یونائیٹڈ کا حصہ ہیں اور اس پابندی کے اطلاق کے بعد وہ پی ایس ایل میں بھی شرکت نہیں کر سکیں گے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں