ارجنٹینا: سٹینڈ سے نیچے گرایا جانے والا فٹبال شائق ہلاک

ارجنٹینا

،تصویر کا ذریعہEPA

،تصویر کا کیپشن

16 فٹ بلند سٹینڈ سے گرنے کی وجہ سے امینوئل کے سر پر چوٹ لگی تھی کیونکہ ان کا سر کنکریٹ کی سیڑھیوں سے ٹکرایا تھا

ارجنٹینا میں فٹبال کے کھیل کا شوقین وہ نوجوان انتقال کر گیا ہے جسے دو دن قبل سٹیڈیم میں میچ کے دوران سٹینڈ سے نیچے پھینک دیا گیا تھا۔

22 سالہ امینوئل بالبو کو اس سٹینڈ میں موجود شائقین نے مخالف ٹیم کا حامی سمجھ لیا تھا اور اطلاعات کے مطابق ایک جھگڑے کے دوران انھیں نیچے پھینک دیا گیا تھا۔

یہ واقعہ سنیچر کو کارڈوبا کی مقامی فٹبال ٹیم بیلگرانو اور ٹالیرس نامی ٹیموں کے میچ کے دوران پیش آیا تھا۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ امینوئل کو نیچے پھینکنے سے قبل ایک شخص نے نعرہ لگایا تھا کہ وہ ٹالیرس کے حامی ہیں جس کے بعد ویڈیو فوٹیج میں انھیں بلندی سے نیچے پھینکتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

16 فٹ بلند سٹینڈ سے گرنے کی وجہ سے امینوئل کے سر پر چوٹ لگی تھی کیونکہ ان کا سر کنکریٹ کی سیڑھیوں سے ٹکرایا تھا۔

اس واقعے کے بعد انھیں فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے کہا تھا کہ ان کا دماغ کام کرنا چھوڑ چکا ہے۔

پولیس نے اس واقعے کے تناظر میں چار افراد کو حراست میں لیا ہے۔

ادھر ارجنٹینا کی فٹبال ایسوسی ایشن نے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ اس ناقابلِ یقین حملے کے ذمہ داران کو کیفرِ کردار تک پہنچایا جائے۔

ارجنٹینا میں فٹبال میچوں کے دوران تشدد غیرمعمولی بات نہیں اور 2013 سے اب تک فٹبال سے متعلق تشدد کے واقعات میں ملک میں 40 کے قریب افراد مارے جا چکے ہیں۔