ورلڈ الیون اور سری لنکا کے بعد ویسٹ انڈیز بھی پاکستان آئے گی: نجم سیٹھی

نجم سیٹھی تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption پاکستان میں سکیورٹی کی صورتحال بہتر ہونے کےبعد کرکٹ بورڈ نے انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کی کوششیں تیز کر دی ہیں

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ ویسٹ انڈیز کی کرکٹ ٹیم اس سال نومبر میں تین ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میچز کھیلنے پاکستان آئے گی۔

نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ انہوں نے ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ کے صدر ڈیو کیمرون سے مذاکرات کیے تھے جس کے بعد ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ نے اس سال نومبر میں پاکستان میں تین ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلنے پر رضامندی ظاہر کی ہے۔

یہ تینوں میچز لاہور میں کھیلے جائیں گے۔ ان میچوں کی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ اپنے اس دورے کے سلسلے میں سری لنکن کرکٹ بورڈ کی طرح آئی سی سی ورلڈ الیون کے دورۂ پاکستان پر نظر رکھے ہوئے ہے۔

نجم سیٹھی نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ دنیا کو یہ باور کرا رہا ہے کہ اب وقت آگیا ہےکہ پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کے دروازے کھلنے چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ آئندہ ماہ آئی سی سی ورلڈ الیون تین ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلنے پاکستان آرہی ہے یہ میچز لاہور میں ہونگے ۔

ورلڈ الیون کے دورے کے بعد اکتوبر میں سری لنکا کی ٹیم ایک ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلنے پاکستان آئے گی۔ اس طرح تین ماہ میں تین بڑی ٹیموں کا پاکستان آنا بڑی کامیابی ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین شہریارخان ایک عرصے سے انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے جائلز کلارک کے ساتھ ورلڈ الیون کے دورے کو یقینی بنانے کے لیے کوشاں تھے ۔

نجم سیٹھی کے پاکستان کرکٹ بورڈ کا چیئرمین بننے کے بعد انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کی کوششوں میں غیرمعمولی تیزی آئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption دو ہزار نو میں لاہور میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر ہونے والےحملے کے بعد پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کا سلسلہ منقطع ہو گیا تھا

انہوں نے ورلڈ الیون کے دورے میں سکیورٹی کے انتظامات کے سلسلے میں پنجاب حکومت سے بات چیت کی ہے جس نے سکیورٹی کی ہرممکن یقین دہانی کرا دی ہے۔

نجم سیٹھی نے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین کاعہدہ سنبھالنے کے بعد بی بی سی اردو کو دیے گئے انٹرویو میں بتایا تھا کہ ورلڈ الیون کے مختصردورے میں سکیورٹی کے موثر انتظامات کو یقینی بنانے کےلیے آئی سی سی کی منظور شدہ سکیورٹی کی ایک بین الاقوامی کمپنی کے حکام بھی پاکستان آ رہے ہیں جو ورلڈ الیون کے دورے تک پاکستان میں رہ کر پنجاب حکومت اور پولیس کے ساتھ مل کر سکیورٹی کے انتظامات کو حتمی شکل دیں گے۔

نجم سیٹھی نے یہ بھی بتایا تھا کہ بین الاقوامی کرکٹرز کی تنظیم فیکا کے نمائندے بھی پاکستان آئیں گے۔

یاد رہے کہ فیکا نے غیرملکی کرکٹرز کو پاکستان سپر لیگ کے فائنل میں شرکت نہ کرنے کے لیے کہا تھا جس پر پاکستان کرکٹ بورڈ نے سخت ناراضی ظاہر کرتے ہوئے فیکا کی رپورٹ کو حقائق کے منافی قرار دیا تھا۔

پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کا سلسلہ مارچ 2009ء میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر لاہور میں ہونے والے دہشت گرد حملے کے بعد منقطع ہوا تھا جس کے بعد زمبابوے کی ٹیم 2015ء میں تین ون ڈے اور دو ٹی ٹوئنٹی کی سیریز کھیلنے پاکستان آئی تھی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے گزشتہ سال پاکستان سپر لیگ کا لاہور میں کامیابی سے انعقاد کیا تھا۔