پاکستان سکواش ٹورنامنٹس کی دوبارہ میزبانی کرے گا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان میں سکیورٹی کی خراب صورتحال کی بنا پر اس سال فروری میں بین الاقوامی سکواش مقابلوں کے یہاں انعقاد پر پابندی عائد کردی گئی تھی

بین الاقوامی سکواش کی عالمی تنظیم پروفیشنل سکواش ایسوسی ایشن ( پی ایس اے ) نے پاکستان میں بین الاقوامی اسکواش ٹورنامنٹس کی میزبانی پر عائد پابندی اٹھالی ہے اور دسمبر میں اسلام آباد میں دو بین الاقوامی مقابلوں کے انعقاد کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان میں سکیورٹی کی خراب صورتحال کی بنا پر اس سال فروری میں بین الاقوامی سکواش مقابلوں کے یہاں انعقاد پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔

پروفیشنل سکواش ایسوسی ایشن کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر الیکس گف کا کہنا ہے کہ دسمبر میں اسلام آباد میں دو ٹورنامنٹس ہوں گے ۔ مردوں کے ٹورنامنٹ کی انعامی رقم پچاس ہزار ڈالر ہوگی جبکہ خواتین ٹورنامنٹ پچیس ہزار ڈالر مالیت کا ہوگا، تاہم انھوں نے یہ بھی کہا ہے کہ دونوں ٹورنامنٹس کا انعقاد دسمبر میں سکیورٹی کی صورتحال سے مشروط ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ پروفیشنل سکواش ایسوسی ایشن کے سکیورٹی ماہرین صورتحال کاجائزہ لینے کے بعد اپنی رپورٹ پیش کریں گے۔

Image caption انٹرنیشنل ٹورنامنٹس کے انعقاد سے نوجوان اور نوعمر کھلاڑیوں کے جوش وخروش میں اضافہ ہوگا

الیکس گف کا کہنا ہے کہ فی الحال انہیں پاکستان میں سکیورٹی کا کوئی خطرہ دکھائی نہیں دیتا لیکن صورتحال پر بدستور نظر رہے گی۔

انھوں نے کہا کہ دسمبر میں دو ٹورنامنٹس کا اسلام آباد میں انعقاد دراصل پاکستان میں بین الاقوامی سکواش کی بحالی کی جانب پہلا قدم ہے۔

دس بار برٹش اوپن جیتنے والے جہانگیر خان کا کہنا ہے کہ دسمبر میں دو انٹرنیشنل ٹورنامنٹس کے انعقاد سے پاکستانی کھلاڑیوں کو اپنی صلاحیتوں کے اظہار کے مواقع ملیں گے اور نوجوان اور نوعمر کھلاڑیوں کے جوش وخروش میں اضافہ ہوگا۔

جہانگیرخان کا کہنا ہے کہ پاکستان کی سکواش کے کھیل میں خدمات کسی سے پوشیدہ نہیں اور انہیں یقین ہے کہ آنے والے دنوں میں پاکستان میں ایک بار پھر انٹرنیشنل سکواش کی سرگرمیاں بھرپور انداز میں دکھائی دیں گی۔

اسی بارے میں