امام الحق کی عینک اور انگلش میں دلچسپی کیوں؟

امام الحق، کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption امام الحق اپنی پہلی سینچری کے بعد سے سوشل میڈیا پر موضوع گفتگو ہیں

ابوظہبی کے شیخ زید سٹیڈیم میں بدھ کے روز پاکستانی کرکٹ ٹیم کی فتح کا سہرا دو نوجوان کھلاڑیوں کے سر باندھا جا رہا ہے جن میں سے ایک نوجوان بیٹسمین امام الحق ہیں جنھوں نے کل اپنا پہلا ایک روزہ میچ کھیلا اور سینچری بنائی تھی۔

امام الحق سماجی رابطوں کی ویب سائٹس ٹوئٹر اور فیس بک پر کل سے موضوع گفتگو ہیں۔ ان کا نام بدھ اور جمعرات کے روز ٹاپ ٹرینڈز میں رہا ہے۔

’اگر انضمام کا بھتیجا ہوں تو میری کیا غلطی‘

کھیلوں کی نامہ نگار فضیلہ صبا نے ٹویٹ کی کہ انھوں نے تو پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ امام کافی آگے جائیں گے۔

پاکستان کے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے ان کے بارے میں ٹویٹ کیا کہ 'ایسے ڈیبیو کا خواب ہی دیکھا جاسکتا ہے۔

نجی ٹی وی چینل سے وابستہ خاتون نیوز اینکر رابعہ انعم نے جیت کے لیے سب سے پہلے اللہ اور پھر امام الحق کا شکریہ ادا کیا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل سے ٹویٹ کی امام الحق دوسرے پاکستانی بیٹسمین ہیں جنھوں نے اپنے پہلے ایک روزہ میچ میں سینچری سکور کی ہے۔

اداکار حمزہ علی عباسی نے ٹویٹ کیا کہ بہترین بولنگ، بیٹنگ اور فیلڈنگ کی وجہ سے پاکستان کو فتح حاصل ہوئی۔ انھوں نے امام الحق کو پہلے میچ میں سینچری سکور کرنے پر مبارکباد بھی دی ہے۔

امام الحق کی متاثر کن بیٹنگ پر انٹر نیشنل کرکٹ کونسل نے بھی اپنے آفیشل ٹوئٹر ہینڈل کے ذریعے انھیں سراہا ہے۔

صرف سابق کھلاڑیوں نے ہی نہیں بلکہ امام الحق کی حوصلہ افزائی ان کے ساتھی اور پاکستانی کرکٹ ٹیم کے لیے اوپنگ کرنے والے بیٹسمین عمر اکمل نے بھی کی ۔ عمر اکمل نے ٹویٹ کر کے امام الحق کے لیے 'ویل بیٹڈ' کے الفاظ استعمال کیے۔

سیاسی مصروفیات میں گھرے وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف بھی امام الحق کی کارکردگی کو نظر انداز نہ کر سکے اور انھوں نے ٹویٹ کیا 'نوجوان اور باصلاحت امام نے کیا شاندار کھیل پیش کیا ہے'۔

ان ٹویٹس کے علاوہ سماجی رابطوں کی دیگر ویب سائٹس پر بھی ان کے بارے میں گفتگو ہوتی رہی۔ لوگوں نے امام الحق کے عینک لگا کر کرکٹ کھیلنے پر بھی باتیں کیں۔ میچ کی اختتامی تقریب کے دوران کمنٹیٹر رمیز راجہ نے امام الحق کی عینک کا ذکر کیا۔

ایک اور دلچسپ بحث جو سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر پر کی جا رہی ہے وہ امام الحق کی با اعتماد 'باڈی لینگویج' اور انگریزی میں گفتگو ہے۔ میچ کی اختتامی تقریب میں جب ان سے کمنٹیٹر نے اردو میں سوال کیا تو امام الحق نے اسکا روانی سے انگریزی میں جواب دیا جس کے بعد اگلے سوالات ان سے انگریزی میں ہی کیے گئے۔ اس پر اکثر لوگوں کا خیال ہے کہ نوجوان کھلاڑی اپنی کارکردگی سے تو متاثر کر ہی رہے ہیں لیکن ان میں اعتماد لانے اور اپنی بات کو متاثر کن انداز میں کہنے کی تربیت کرانے کی بھی ضرورت ہے۔ اس کی تازہ مثال امام الحق کی صورت میں پیش کی جا رہی ہے۔

واضح رہے امام الحق اپنے پہلے میچ میں سنچری بنانے والے دنیا کے 13ویں اور دوسرے پاکستانی کھلاڑی بن گئےہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں