مشکوک شخص کے رابطے کی تصدیق، اہم کھلاڑی کا نام بتانے سے گریز

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی نے تصدیق کی ہے کہ سری لنکا کے خلاف ون ڈے سیریز کے دوران پاکستانی کرکٹ ٹیم کے ایک کھلاڑی سے مشکوک شخص نے رابطہ کیا تھا تاہم انھوں نے اس کھلاڑی کا نام نہیں بتایا ہے۔

ہمارے نامہ نگار عبدالرشید شکور نے بتایا کہ دوسری جانب انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کا اینٹی کرپشن یونٹ اس رابطے کی تفصیلات معلوم کرنے کے لیے مذکورہ کھلاڑی کا انٹرویو کرے گا۔

سٹّے بازوں کا پاکستانی کرکٹر سے رابطہ

واضح رہے کہ آئی سی سی کا یہ قانون ہے کہ کوئی بھی کرکٹر اگر اس طرح کے کسی بھی مشکوک شخص سے رابطے کی اطلاع دیتا ہے تو پھر آئی سی سی کا اینٹی کرپشن یونٹ اس کرکٹر سے تفصیلات معلوم کرتا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی نے ہفتے کے روز ٹوئٹ میں کہا ہے کہ 'ایک کھلاڑی سے رابطہ کیا گیا تھا۔ قواعد وضوابط کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کو فوری طور پر مطلع کردیا گیا ۔پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس کی اطلاع آئی سی سی کو دے دی اور اب یہ معاملہ مشترکہ طور پر دیکھا جارہا ہے۔'

یاد رہے کہ ایک مشکوک شخص کی جانب سے پاکستانی کرکٹ ٹیم کے انتہائی اہم کھلاڑی سے مبینہ رابطہ 17 اکتوبر کو پاکستان اور سری لنکا کے درمیان تیسرے ون ڈے سے قبل کیا گیا تھا جس پر اس کھلاڑی نے اپنی ٹیم منیجمنٹ اور اینٹی کرپشن یونٹ کو فوری اطلاع دے دی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں