نوجوان انڈین کرکٹر کا حیرت انگیز کارنامہ، بغیر کوئی رن دیے دس وکٹیں

آکاش چودھری تصویر کے کاپی رائٹ VIVEK YADAV
Image caption آکاش چودھری ابھی صرف 15 سال کے ہیں لیکن 130 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے بولنگ کرتے ہیں

انڈیا کے ایک ابھرتے ہوئے نوجوان کرکٹر نے ٹی ٹوئنٹی کے ایک مقامی میچ میں ایک بھی رن دیے بغیر دس کی دس وکٹیں حاصل کر لیں۔

پاکستانی فاسٹ بولر شعیب اختر، آسٹریلین فاسٹ بولر بریٹ لی، انڈین بولر ظہیر خان اور جسپریت بمراہ کی بولنگ کو دیکھتے ہوئے کرکٹ کھیلنے والے آکاش چودھری نے بدھ کو راجستھان کے شہر جے پور میں یہ انوکھا کارنامہ انجام دیا۔

اس میچ میں ان کی ٹیم 'دِشا کرکٹ اکیڈمی' نے پہلے کھیلتے ہوئے 156 رنز بنائے جس کے جواب میں 'پرل کرکٹ اکیڈمی' صرف 36 رنز بنا سکی اور آکاش نے سارے کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

آکاش چودھری نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا: 'میں نے پہلے اوور میں دو وکٹیں لیں۔ اس کے بعد دوسرے اور تیسرے اوورز میں بھی دو دو وکٹیں حاصل کیں۔ آخری اوور میں چار وکٹ لیں جس میں ایک ہیٹ ٹرک بھی شامل ہے۔ چھ کھلاڑیوں کو بولڈ اور باقی چار کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کیا۔'

کرکٹ کاجنون کی حد تک شوق

تصویر کے کاپی رائٹ VIVEK YADAV
Image caption آکاش چودھری کے کوچ بتاتے ہیں کہ ابھی تک وہ 15 بار پانچ وکٹیں لے چکے ہیں

آکاش نے بتایا: 'میں نے 15 سے زیادہ بار ایک میچ میں پانچ وکٹیں لی ہیں جس میں کئی بار چھ اور سات وکٹیں بھی ہیں۔ سارا دن صرف کرکٹ ہی میرے ذہن پر سوار رہتا ہے۔ صبح اٹھ کر چھ بجے سے سیشن شروع ہو جاتا ہے، اس کے بعد فیلڈنگ ہوتی ہے۔ لنچ کے بعد تین بجے سے نیٹ پریکٹس شروع ہوتی ہے۔'

یہ بھی پڑھیں

٭ پرتھوی شا: پانچ میچوں میں چار سنچریاں

٭ ریورس سوئنگ کون لوٹائے گا؟

٭ کوہلی نے تندولکر کا ایک اور ریکارڈ توڑ دیا

شعیب اختر پسند ہیں، لیکن ان کی نقل نہیں کرتا

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption آکاش بتاتے ہیں کہ شعیب اختر اور بریٹ لی ان کے پسندیدہ بولرز ہیں لیکن وہ کسی کی نقل نہیں کرتے

آکاش بتاتے ہیں: 'مجھے شعیب اختر، جسپريت بمرا اور بریٹ لی بہت پسند ہیں لیکن میں کسی کی نقل نہیں کرتا کیونکہ اس سے نہ تو آپ اپنے رول ماڈل جیسے بن پاتے ہیں اور نہ ہی آپ وہ بن پاتے ہیں جو بننا چاہتے ہیں۔'

آکاش کے ساتھ کھیلنے والے پارتھ اپادھیائے نے بی بی سی کو بتایا: 'جس عمر میں آکاش اتنی شاندار بولنگ کر رہے ہیں اس سے ان کے رنجی ٹرافی میں منتخب ہونے کی بہت امید ہے۔ عام گیند بازوں کا بڑا ہتھیار سٹاپ بال ہوتا ہے لیکن آکاش ان سوئنگ اور آؤٹ سوئنگ دونوں کراتے ہیں۔ ٹی 20 کے بہت مؤثر بالر ہیں کیونکہ وہ سلو اور کٹر گیندیں بھی پھینک لیتے ہیں۔'

ان کے کوچ وویک یادو نے بی بی سی کو بتایا کہ آکاش میں بہت صلاحیت ہے اور ان میں اسے نکھارنے کے لیے سخت محنت کرنے کا جذبہ بھی ہے۔

وہ کہتے ہیں: 'آکاش روزانہ آٹھ گھنٹے مشق کرتے ہیں۔ ان کی عمر ابھی صرف 15 سال ہے اور وہ 130 کلومیٹر فی گھنٹہ کی اوسط رفتار سے بولنگ کرتے ہیں۔'

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں