میں کرکٹ روبوٹ نہیں ہوں، مجھے آرام کی ضرورت ہے: ویراٹ کوہلی

کوہلی تصویر کے کاپی رائٹ AFP

انڈین کرکٹ ٹیم کے کپتان ویراٹ کوہلی نے کہا ہے کہ انھیں بین الاقوامی کرکٹ میں آرام کی ضرورت ہے اور یہ کہ 'میں روبوٹ نہیں ہوں‘۔

امید کی جا رہی ہے کہ ویراٹ کوہلی کو سری لنکا کے خلاف جمعرات سے کولکتہ میں شروع ہونے والے سیریز کے آخری حصے میں نہیں کھیلایا جائے گا تاکہ وہ اگلے برس جنوری میں جنوبی افریقہ کے خلاف کھیلی جانے والی سیریز کے لیے تازہ دم ہو جائیں۔

یہ بھی پڑھیے

’دھونی انڈیا کو ہر میچ نہیں جتوا سکتے‘

کرکٹروں کی دس مشہور توہم پرستیاں

تیز ترین 9000 رنز کا ریکارڈ بھی وراٹ کوہلی کے نام

’محمد عامر دنیا کے مشکل ترین بولر ہیں‘

سنہ 2017 میں کسی بھی انڈین کھلاڑی کے مقابلے میں سات ٹیسٹ، 26 ایک روزہ اور 10 ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلنے والے ویراٹ کوہلی کا اس حوالے سے کہنا ہے 'یقینی طور پر مجھے آرام کی ضرورت ہے‘۔

انڈیا کے معروف بیٹسمین نے مزید کہا 'میں روبوٹ نہیں ہوں، آپ میری جلد کاٹ کر دیکھ سکتے ہیں کہ اس میں سے خون بہتا ہے۔'

واضح رہے کہ ویراٹ کوہلی کو سری کے خلاف کھیلے جانے والے دو ٹیسٹ میچوں میں انڈین سکواڈ میں شامل کیا گیا ہے لیکن یہ امید کی جا رہی ہے کہ انھیں تیسرے ٹیسٹ کے علاوہ تین ایک روزہ اور تین ٹی ٹوئنٹی میچوں میں آرام دیا جائے گا۔

29 سالہ کوہلی بین الاقوامی کرکٹرز میں سب سے فٹ ہیں لیکن وہ نہیں چاہتے کہ خود کو بہت زیادہ تھکا دیں۔

اس حوالے سے ان کا کہنا ہے 'یہ وہ واحد چیز ہے جسے میرا خیال نہیں کہ لوگ اس کی وضاحت کر سکتے ہیں۔ کام کے بوجھ کے لحاظ سے بہت سی باتیں ہیں کہ آیا ایک کھلاڑی کو آرام دیا جائے یا نہیں۔'

انھوں نے کہا 'ہمیں اس بات پر اب خاص طور غور کرنا چاہیے کیونکہ حقیقت یہ ہے کہ ہم نے اب 20 سے 25 کھلاڑی کی ایک مضبوط ٹیم بنائی ہے۔'

انھوں نے مزید کہا کہ انسان تھک جاتا ہے اور اپنی پرفارمنس برقرار رکھنا مشکل ہو جاتا ہے۔

دوسری جانب انڈین آل راؤنڈر ہردک پانڈے بھی زیادہ کھیل کے باعث سری لنکا کے خلاف سیریز سے باہر ہو گئے ہیں اور بنگلور میں قائم کرکٹ اکیڈمی میں ان کی تھراپی کی جا رہی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں