'انگلینڈ کے کرکٹر ٹھگ نہیں، ٹیم میں شراب نوشی کا چلن بھی نہیں'

سٹراس تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

انگلینڈ کرکٹ کے سربراہ اور سابق کرکٹر اینڈریو سٹراس نے کہا ہے کہ ان کے کھلاڑی نہ ٹھگ ہیں اور نہ ہی ٹیم میں شراب نوشی کا رواج ہے۔

تاہم آسٹریلیا اور انگلینڈ میں شائع خبروں کے مطابق انھوں نے نصف شب کے بعد ایشز سیریز کے لیے آسٹریلیا کا دورہ کرنے والی انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے ارکان کے باہر نکلنے پر پابندی لگا دی ہے۔

یہ اقدام گذشتہ ماہ کے اواخر میں پرتھ کے ایک بار میں جونی بیئرسٹو کے کیمرون بین کرافٹ کو ٹکر مارنے کے بعد کیے گئے ہیں۔ جبکہ ستمبر میں برسٹل کے ایک نائٹ کلب کے باہر مار پیٹ کرنے کے معاملے میں انگلینڈ کے آل راؤنڈر بین سٹوکس کے خلاف پولیس کی تفتیش جاری ہے۔

سٹراس نے کہا کہ بیئرسٹو نے بین کرافٹ کو خوش آمدید کہنے کے لیے ٹکر ماری تھی کیونکہ وہ ’اپنے دوستوں کے ساتھ ایسا ہی کرتے ہیں۔‘

جبکہ ہیڈ کوچ نے پیر کو بیئرسٹو کے رویے کو 'احمقانہ' قرار دیا اور ان پر آسٹریلیا کو تنقید کے لیے ’مواد‘ فراہم کرنے کا الزام لگایا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption انگلینڈ کے کھلاڑی جونی بيئر سٹو پر الزام ہے کہ انھوں نے گذشتہ ماہ کیمرون بینکروفٹ کو سر سے ٹکر ماری تھی

کرکٹ داٹ کام ڈاٹ اے یو اور دی ٹیلی گراف کی خبروں کے مطابق ای سی بی کے سربراہ سٹراس نے کہا: ’آپ رات میں باہر نکل کر کیا کرتے ہیں اس سے کسی بھی طرح ٹیم کو یا ای سی بی کو یا کرکٹ کے کھیل کو زک نہ پہنچے کہ لوگ اس پر تبصرہ کرنے لگیں۔‘

انھوں نے کہا کہ ’کھلاڑیوں کو اس بات کو سمجھنے کی ضرورت ہے اور ان سے یہ پہلے بھی کہا جا چکا ہے۔‘

انھوں نے کہا: ’در حقیقت وہ بالغ ہیں، سمجھدار ہیں لیکن بعض اوقات وہ اپنی عقل کا اچھی طرح استعمال نہیں کرتے۔‘

انھوں نے کہا: ’یہ لوگ ٹھگ نہیں ہیں۔ وہ اچھے، ایماندار اور محنتی کرکٹر ہیں اور انھوں نے انگلینڈ کے ساتھ کھیلنے کے لیے قربانیاں دی ہیں۔۔۔ انھوں نے انگلینڈ کی جرسی میں بڑے کام کیے ہیں۔ میں ان کا اخیر تک ساتھ دیتا رہوں گا کیونکہ میں انھیں جانتا ہوں۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں