انڈیا کا پاکستان سے نہ کھیلنے کا معاملہ ، پی سی بی نے آئی سی سی کو خط بھیج دیا

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption 2008 کے بعد سے پاکستان اور انڈیا نے کوئی دو طرفہ سیریز نہیں کھیلی ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کو جمعرات کے روز ایک خط بھیجا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ وہ تنازعات نمٹانے سے متعلق ایک کمیٹی قائم کرے جو انڈیا کا پاکستان کے ساتھ نہ کھیلنے کے معاملے کی جانچ پڑتال کرے۔

پی سی بی کافی عرصے سے یہ کہتا آیا ہے کہ وہ انڈیا کی جانب سے پاکستان کے ساتھ دو طرفہ سیریز نہ کھیلنے کا معاملہ آئی سی سی کے سامنے پیش کرے گا۔

پاکستان اور انڈیا کے کرکٹ کے تعلق کی بحالی کے بارے میں مزید پڑھیے

’پاکستان کے ساتھ دو طرفہ سیریز کا کوئی امکان نہیں‘

’انڈیا نہیں کھیلنا چاہتا تو آئی سی سی کیا کرے؟‘

’پہلے انڈیا یہاں آ کر کھیلے پھر ہم جائیں گے‘

بی بی سی کے نامہ نگار عبدالرشید شکور سے بات کرتے ہوئے پاکستان کرکٹ بورڈ کے ترجمان نے کہا کہ بورڈ کا موقف ہے کہ انڈین کرکٹ بورڈ (بی سی سی آئی) نے اس کے ساتھ یہ طے کیا تھا کہ دونوں ٹیمیں 2015 سے 2023 تک چھ سال کے عرصے میں آٹھ سیریز کھیلیں گی لیکن بی سی سی آئی نے اس معاہدے کی پاسداری نہیں کی جس کی وجہ سے پاکستان کرکٹ بورڈ کو خاصا مالی نقصان ہوچکا ہے۔

انڈین کرکٹ بورڈ اس بارے میں ہمیشہ یہ کہتا آیا ہے کہ اسے اپنی حکومت کی جانب سے پاکستان کے ساتھ دو طرفہ سیریز کھیلنے کی اجاز ت نہیں ملتی تاہم پاکستان کرکٹ بورڈ کا موقف یہ ہے کہ اس نے بی سی سی آئی کے ساتھ جو معاہدہ کیا ہے اس میں کہیں بھی حکومتی اجازت کا ذکر موجود نہیں ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے آئی سی سی کی تنازعات سے متعلق کمیٹی کے سامنے اس معاملے کو اٹھانے کے لیے تمام قانونی تیاریاں مکمل کررکھی ہیں۔ اس سلسلے میں پی سی بی نے برطانوی لیگل فرم سے بھی مشاورت کی ہے اور اس سلسلے میں خاصی بڑی رقم مختص کی گئی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں