ایلیس پیری: آسٹریلیا کی وومن کرکٹر جو کہ ہر فن مولا ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایلیس پیری آسٹریلیا کی سب سے مشہور سپورٹس وومن ہیں

اس سال وومن کرکٹر آف دی ایئر کا ایوارڈ پانے والی آسٹریلیا کی ایلیس پیری کوئی عام سپورٹس وومن نہیں ہیں اور نہ ہی انھیں صرف ایک کرکٹر کہا جا سکتا ہے۔

27 سالہ آل راؤنڈر کو آئی سی سی کا پہلا ریچل ہیہو فلنٹ ایوارڈ دیا گیا جو کہ انگلینڈ کی سابق کپتان کے نام پر ہے جن کا اس سال جنوری میں انتقال ہو گیا تھا۔

مزید پڑھیئے

کرکٹ کی تاریخ کے یادگار چھکے

آئی سی سی کا خواتین کرکٹ کے لیے دگنی فنڈنگ کا اعلان

جھولن گوسوامی، انڈیا کی جوئل گارنر

سب سے زیادہ رنز کا ریکارڈ متالی راج کے نام

انگلینڈ کی مردوں کی ٹیم تو تین ٹیسٹ میچ ہار کر ایشز ہار ہی چکی ہے لیکن اس سال انگلینڈ کی وومن ٹیم بھی ایشز ٹیسٹ سیریز ہار گئی تھی جس میں پیری کا ایک اہم کردار تھا۔ پیری نے اس سیریز میں جو کہ ان کی ساتویں ایشز سیریز تھی بغیر اپنی وکٹ کھوئے 213 رنز بنائے تھے۔ یہ کسی بھی آسٹریلین وومن کھلاڑی کا سب سے زیادہ انفرادی سکور ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایلیس پیری نے بیٹنگ اور بولنگ دونوں شعبوں میں اپنے ملک کے لیے نمایاں کارنامے سر انجام دیے ہیں

پیری کیا کچھ کر سکتی ہیں؟

وہ نہ صرف کرکٹ کھیلتی ہیں بلکہ ان کی ٹانگ فٹ بال میں بھی اڑی ہے اور انھوں نے فٹبال ورلڈ کپ کے کوارٹر فائنل میں ایک حیرت انگیز گول کر کے سب کو چونکا دیا تھا۔

کرکٹ کی ببات کریں تو جب 2013 میں انگلینڈ کی آسٹریلیا کے ہاتھوں ہار ہوئی تو اس میں پیری کا بڑا کردار تھا۔ انھوں نے اپنے ٹوٹے ہوئے ٹخنے کے باوجود تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایلیس پیری نہ صرف کرکٹ بلکہ فٹبال میں بھی ایک خاص مقام رکھتی ہیں

اس کے علاوہ وہ کم عمر لڑکیوں میں کھیلوں کو فروغ دینے کے لیے کھیلوں سے متعلق بچوں کی کتابیں بھی لکھتی ہیں۔

وہ مردوں اور عورتوں میں آسٹریلیا کی طرف سے کھیلنے والی سب سے کم عمر کرکٹر ہیں۔ انھوں نے 16 سال کی عمر سے آسٹریلیا کے لیے کھیلنا شروع کر دیا تھا اور اس کے دو ہفتے بعد ہی انھوں نے آسٹریلیا کی فٹبال ٹیم کے لیے بھی میچ کھیلا۔

وہ 2010، 2012 اور 2014 میں آسٹریلیا کے ساتھ وومنز ورلڈ ٹوئنٹی 20 جیت چکی ہیں۔

سنہ 2015 کی ایشز سیریز میں انھیں پلیئر آف دی سیریز قرار دیا گیا تھا۔ اس سیریز میں انھوں نے 264 رنز بنانے کے علاوہ 16 وکٹیں بھی حاصل کی تھیں۔

سنہ 2014 اور 2016 کے درمیان انھوں نے ایک روزہ میچوں میں 17 نصف سنچریاں بھی بنائیں جو کہ کسی بھی کرکٹر کے لیے سب سے بہتر کارکردگی ہے۔

اب 27 سال کی عمر میں ان کا آسٹریلیا کے کھیلوں میں ایک منفرد مقام ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایلیس پیری: جیت جن کا مقدر ہے

اسی بارے میں