’انڈیا اور پاکستان کے مابین کرکٹ سیریز کا کوئی امکان نہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ میچ اکثر سیاست کی نظر ہوجاتا ہے

انڈیا کی حکومت نے پاکستان کے ساتھ کرکٹ روابط کی بحالی کا امکان مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی جانب سے سرحد پار فائرنگ کے بڑھتے ہوئے واقعات کی وجہ سے دونوں ممالک کے درمیان کرکٹ سیریز کا انعقاد ممکن نہیں ہے۔

انڈین ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ بات وزیرِ خارجہ سشما سوراج نے ایک مشاورتی اجلاس میں کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ سرحدی کشیدگی کی وجہ سے دونوں ممالک میں ’کرکٹ ڈپلومیسی‘ کے لیے حالات سازگار نہیں۔

یہ بھی پڑھیے

’کیا پاک بھارت کرکٹ نہ ہونے سے دہشت گردی ختم ہو گئی؟‘

’انڈیا نہیں کھیلنا چاہتا تو آئی سی سی کیا کرے؟‘

کیا پاکستان انڈیا کرکٹ سے امن بڑھ سکتا ہے؟

دوطرفہ سیریز کا معاملہ، پی سی بی کا آئی سی سی کو خط

دونوں ممالک میں کشیدگی کم کرنے کے لیے کرکٹ سیریز کے انعقاد سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ انسانیت کے ناطے خواتین اور معمر قیدیوں کی رہائی کا خیال تو زیرِ غور ہے لیکن سرحد پر پاکستان کی جانب سے بلااشتعال فائرنگ اور گولہ باری کی وجہ سے کرکٹ سیریز کا انعقاد ممکن نہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سشما سوراج نے واضح کیا کہ سرحد پر بڑھتی ہوئی کشیدگی کے دوران ایسی فضا قائم نہیں ہو سکتی جس میں کھیل جیسی سرگرمیوں کا تبادلہ ہو

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے خلاف پاکستان یا انڈیا میں تو کیا کسی تیسرے مقام پر بھی بھی کرکٹ سیریز نہیں ہو سکتی۔

سشما سوراج کا یہ بھی کہنا تھا کہ گذشتہ ایک سال کے دوران پاکستان کی جانب سے سرحد پر فائرنگ کے 800 سے زیادہ واقعات ریکارڈ کیے گئے ہیں۔

انھوں نے واضح کیا کہ سرحد پر بڑھتی ہوئی کشیدگی کے دوران ایسی فضا قائم نہیں ہو سکتی ہے، جس میں کھیل جیسی سرگرمیوں کا تبادلہ ہو۔

یہ پہلا موقع نہیں کہ انڈین حکومت نے اپنی ٹیم کو پاکستان کے خلاف کھیلنے کی اجازت دینے سے منع کیا ہو۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption عام رائے یہی ہے کہ دونوں ملکوں کے عوام بھی ان ٹیموں کو کھیلتے دیکھنا چاہتے ہیں

گذشتہ برس مارچ میں بھی بورڈ آف کرکٹ کنٹرول انڈیا نے ایک خط کے ذریعے حکومت سے پاکستان کے خلاف سیریز کھیلنے کی اجازت مانگی تھی تاہم انڈین وزارتِ داخلہ نے قومی کرکٹ ٹیم کو پاکستان کے خلاف دبئی میں کرکٹ سیریز کھیلنے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا تھا۔

یاد رہے کہ انڈیا کی جانب سے یہ بیان ایک ایسے وقت پر آیا ہے جب انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی جانب سے جاری کیے گئے نئے فیوچر ٹور پروگرام کلینڈر میں انڈیا اور پاکستان کے مابین کوئی کرکٹ سیریز شیڈول نہیں ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کی پالیسی ہے کہ پاکستان انڈیا کے ساتھ انڈیا میں اس وقت تک نہیں کھیل سکتا جب تک انڈیا 2014 کی مفاہمت کی یادداشت کے تحت پاکستان میں یا کسی تیسرے ملک میں نہیں کھیل لیتا اور اس بات پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکتا۔

اسی بارے میں