ویسٹ انڈیز کے چار کھلاڑیوں کی ’قومی ٹیم پر پی ایس ایل کو فوقیت‘

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption ویسٹ انڈین کھلاڑی ڈیرن سیمی اور مارلن سیموئلز نے 2017 میں پی ایس ایل کی فاتح ٹیم پشاور زلمی کی نمائندگی کی تھی

ویسٹ انڈیز کے چار سینئیر کھلاڑیوں نے 2019 میں ہونے والے کرکٹ ورلڈ کپ کے لیے کھیلے جانے والے کوالیفائنگ ٹورنامنٹ میں شرکت کرنے سے معذرت کر لی ہے اور قومی ٹیم کے بجائے پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) میں کھیلنے کو فوقیت دی ہے۔

ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ نے چار مارچ سے زمبابوے میں شروع ہونے والے کوالیفائنگ ٹورنامنٹ کے لیے 15 رکنی ٹیم کا اعلان کیا لیکن کائرون پولارڈ، سنیل نارائن، ڈیرن براوو اور آندرے رسل اس ٹیم میں شامل نہیں ہیں، کیونکہ انھوں نے ویسٹ انڈیز بورڈ کو مطلع کیا ہے کہ وہ 22 فروری سے شروع ہونے والے پی ایس ایل میں شرکت کرنے کو ترجیح دیں گے۔

٭ پاکستان سپر لیگ 2 کی ٹیمیں بن گئیں

٭ پشاور زلمی پاکستان سپر لیگ 2017 کی فاتح

یاد رہے کہ ویسٹ انڈیز کے متعدد کھلاڑیوں نے پی ایس ایل کے دونوں ایڈیشنز میں شرکت کی تھی اور گذشتہ سال کی فاتح ٹیم پشاور زلمی کی قیادت بھی ویسٹ انڈیز کے ڈیرن سیمی کے پاس تھی۔

سیمی کے علاوہ مارلن سیموئلز بھی ٹیم کا حصہ تھے اور دونوں نے لاہور میں ہونے والے فائنل میں شرکت کی تھی۔

لیکن اس سال مارلن سیموئلز قومی ٹیم کا حصہ ہوں گے اور ان کے علاوہ ماضی میں پی ایس ایل میں شرکت کرنے والے کرس گیل اور کارلوس بریتھ ویٹ بھی قومی ٹیم کی نمائندگی کریں گے۔

کوالی فائنگ ٹورنامنٹ میں ویسٹ انڈیز گروپ اے میں شامل ہے اور وہ اپنا پہلا میچ چھ مارچ کو کھیلے گا۔ دوسری جانب پی ایس ایل تھری کا آغاز متحدہ عرب امارات میں 22 فروری سے ہو گا جبکہ ٹورنامنٹ کے دونوں سیمی فائنل اور فائنل پاکستان میں کھیلے جائیں گے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں