لاہور قلندرز کے مستفیض ساتھ چھوڑ گئے، کائل ایبٹ ٹیم کا حصہ ہوں گے

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بنگلہ دیش کے بائیں ہاتھ سے فاسٹ بولنگ کرنے والے مستفیض الرحمان چار مارچ سے قومی ٹیم کا حصہ بننے کے لیے روانہ ہو جائیں گے جس کے بعد پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) میں ان کی ٹیم لاہور قلندرز نے جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے کائل ایبٹ کو اپنی ٹیم کا حصہ بنا لیا ہے۔

لاہور قلندرز کے ذرائع کے مطابق 22 سالہ مستفیض الرحمان اس سال اپنا پہلا پی ایس ایل کھیل رہے تھے جہاں انھوں نے لاہور قلندرز کے تینوں میچوں میں حصہ لیا تھا اور ٹیم کے بہترین بولر تھے۔

قلندروں کی ٹیم کا کوئی قصور نہیں

ملک یا پرائیویٹ لیگز، فوقیت کسے دی جائے؟

انھوں نے اب تک 18 کی اوسط سے تین وکٹیں حاصل کیں اور تینوں میچوں میں ان کا اکانومی ریٹ چھ رنز سے کم تھا۔

لیکن مستفیض کی عمدہ بولنگ کے باوجود ان کی ٹیم لاہور قلندرز اب تک کوئی بھی میچ نہیں جیت سکی ہے اور تینوں میچ ہار کر ٹورنامنٹ میں آخری درجے پر ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کائل ایبٹ (دائیں سے دوسرے) ماضی میں آئی پی ایل بھی کھیل چکے ہیں

ان کی جگہ شامل کیے جانے والے 30 سالہ کائل ایبٹ جنوبی افریقہ سے نمائندگی کر چکے ہیں اور قومی ٹیم کے علاوہ لسٹ اے میں 112 ٹی ٹوئنٹی کھیل چکے ہیں جس میں انھوں نے 29 رنز کی اوسط اور آٹھ رنز کے اکانومی ریٹ کے ساتھ 106 وکٹیں حاصل کی ہیں۔

یہ پہلا موقع ہے جب ایبٹ کو پی ایس ایل میں کسی ٹیم کی نمائندگی کریں گے۔

ایبٹ اس سے پہلے انڈین پریمئیر لیگ اور بنگلہ دیش پریمئیر لیگ میں شرکت کر چکے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں