پاکستان سپر لیگ: مشکوک شخص کو سٹیڈیم سے باہر نکال دیا گیا

پی ایس ایل تصویر کے کاپی رائٹ PSL

پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن یونٹ نے متحدہ عرب امارات میں جاری پاکستان سپر لیگ کے دوران کارروائی کرتے ہوئے ایک مشکوک شخص کو سٹیڈیم سے باہر نکال دیا ہے۔

میدان سے باہر نکالے جانے والے مشکوک شخص کا تعلق بنگلہ دیش سے بتایا گیا ہے۔

یہ واقعہ دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں پیش آیا تھا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ذرائع کے مطابق اس مشکوک شخص کو گراؤنڈ سے باہر کیے جانے کی وجہ یہ بتائی گئی ہے کہ وہ مبینہ طور پر موبائل فون پر میچ سے متعلق معلومات کسی کو فراہم کر رہا تھا۔

پی ایس ایل کے بارے میں مزید پڑھیے

انضمام الحق کھلاڑیوں کے ان فٹ ہونے سے پریشان

سنسنی خیز مقابلے کے بعد پشاور زلمی کی جیت

ملک یا پرائیویٹ لیگز، فوقیت کسے دی جائے؟

پی ایس ایل تھری: کرپشن کی روک تھام کے لیے بین الاقوامی ویب سائٹ کی خدمات

واضح رہے کہ موبائل فون کے ذریعے سٹیڈیم سے بکیز کو معلومات فراہم کرنے کو ’پچ سائیڈنگ‘ کہا جاتا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس بار میچ فکسنگ اور سپاٹ فکسنگ کی موثر روک تھام کے لیے انتہائی سخت اقدامات کیے ہیں۔

اس سلسلے میں گراؤنڈ سے موبائل فون پر مشکوک رابطوں کو روکنے پر خاص نظر رکھی جا رہی ہے جبکہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن یونٹ نے ایک بین الاقوامی ویب سائٹ کی خدمات بھی حاصل کررکھی ہیں جس کا مقصد پاکستان سپر لیگ کے دوران شرطیں (بیٹنگ) لگانے کی کسی بھی قسم کی غیرمعمولی کوشش کو مانیٹر کیا جا سکے اور اگر ایسی کوئی غیر معمولی شرط لگتی ہے تو یہ ویب سائٹ پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن یونٹ کو فوری طور پر چوکنا کر دے گی۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال پاکستان سپر لیگ کے دوران سپاٹ فکسنگ سکینڈل سامنے آیا تھا جس میں ملوث دو کرکٹرز شرجیل خان اور خالد لطیف پر پانچ سال جبکہ شاہ زیب حسن پر ایک سال کی پابندی عائد کی گئی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں