لاہور قلندرز کی کوئٹہ گلیڈیٹرز کو 17 رنز سے شکست

تصویر کے کاپی رائٹ PSL
Image caption لاہور قلندرز کی لگاتار تیسری کامیابی کے بعد مجموعی چھ پوائنٹس کے باوجود وہ پوائنٹس ٹیبل پر سب سے نیچے ہے

پاکستان سپر لیگ کی تیسرے ایڈیشن میں بدھ کو شارجے میں کھیلے گئے میچ میں لاہور قلندرز نے کوئٹہ گلیڈیٹرز کو 17 رنز سے شکست دے دی۔ لاہور قلندرز کی یہ تیسری لگاتار جیت ہے۔

کوئٹہ گلیڈیٹرز نے ٹاس جیت کر لاہور قلندرز کو پہلے بیٹنگ کرنے کی دعوت دی اور لاہور قلندرز نے 20 اوورز میں کوئٹہ گلیڈیٹرز کو جیتنے کے لیے 187 رنز کا ہدف دیا تھا۔

کوئٹہ گلیڈیٹر نے 20 اوورز میں چھ ووکٹوں کے نقصان پر 169 رنز بنائے۔

لاہور قلندرز کی فتح میں فخر زمان نے اہم کردار ادا کیا اور انھوں نے 50 گیندوں پر 95 رنز بنائے۔ لاہور قلندرز کی جانب سے کوئٹہ کو مشکل ہدف دینے میں فخر زمان کی اننگز بہت اہم رہی۔

فخر زمان کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

لاہور قلندرز کے ہدف کے تعاقب میں کوئٹہ نے اپنی اننگز کا آغاز کیا تو اُس کے دونوں اوپنر جیسن روئے اور واٹس 58 کے مجموعی سکور پر آؤٹ ہو گئے۔ واٹسن نے 12 اور جیسن روئے نے 36 رنز بنائے تھے۔

اس کے پیٹرسن کریز پر آئے لیکن وہ بھی بڑے ہدف کو حاصل کرنے کے لیے مجموعی رنز میں خاطر خواہ اضافہ نہیں کر سکے۔ کوئٹہ گلیڈیٹر کی جانب سے زیادہ رنز رائلی روسو نے بنائے۔ انھوں نے 22 گیندوں پر 42 رنز بنائے۔

کپتان سرفراز احمد 28 رنز بنا کر ناٹ آوٹ رہے اور 20 اووز مکمل ہونے پر کوئٹہ گیڈیٹرز نے چھ ووکٹوں کے نقصان پر 169 رنز بنائے۔

لاہور قلندرز کی جانب سے نارائن اور یاسر شاہ نے دو دو وکٹیں لیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ PSL

لاہور قلندرز کی اننگز

لاہور قلندرز کی طرف سے اوپنگ کرنے والے بلے باز فخر زمان نے کوئٹہ گلیڈیٹرز کے خلاف بدھ کو کھیلنے جانے والے میچ میں اس ٹورنامنٹ کا اب تک سب سے زیادہ انفرادی سکور بنایا۔

انھوں نے بڑی جارہانہ انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے پچاس گیندوں پر 94 رنز بنائے۔ انھوں نے راحت علی کی ایک اوور میں تین چھکے اور ایک چوکے کی مدد سے 24 رنز سکور کیے۔

لاہور قلندرز کی پہلی وکٹ 43 کے مجموعی سکور پر گری، جب ڈفسچ نے راحت علی کو ایک پل شاٹ پر چھکا مارنے کی کوشش کی لیکن باونڈری لائن پر کھڑے انور علی نے کیچ پکڑ لیا۔

دوسری طرف فخر زمان اچھی بیٹنگ کرتے رہے اور انھوں نے اگلی ہی گیند پر راحت علی کو لیگ پر شاندار چھکا لگایا۔

پاور پلے کے بعد سرفراز نے نوجوان تیز رفتار بالر میر حمزا کو بلایا۔ بائیں ہاتھ سے گیند کرنے والے نوجوان بالر نے پہلے ہی اوور میں وکٹ حاصل کر لی۔ انھوں نے قلندرز کے بلے باز آغا سلمان کو بولڈ کر دیا۔

قلندرز کی طرف سے تیسری وکٹ ان کے کپتان میکلم کی گری۔ انھیں سرفراز نے اسٹمپ کر دیا۔

دوسری طرف فخر زمان پر اعتماد انداز میں بیٹنگ کرتے رہے اور انھوں نے چھتیس گیندوں پر اپنی نصف سنچری مکمل کی لیکن وہ اپنی سنچری نہیں بنا سکے۔

لاہور قلندرز نے بیس اوور میں 186 رنز بنائے اور ان کے چار کھلاڑی آؤٹ ہوئے۔

لاہور قلندر کی لگاتار تیسری کامیابی کے بعد اس کے مجموعی پوائنٹس چھ ہو گئے ہیں لیکن اب وہ پوائنٹس ٹیبل پر سب سے نیچے ہے اور اس کے اگلے مرحلے میں جانے کا کوئی امکان نہیں ہے۔

کوئٹہ گلیڈیٹرز پہلے ہی اس پلے آف رؤانڈ میں پہنچ گئی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں