لیوک رونکی نے اسلام آباد یونائیٹڈ کو پی ایس ایل تھری کے فائنل میں پہنچا دیا

لیوک رونکی تصویر کے کاپی رائٹ PSL

دبئی میں کھیلے جانے والے پاکستان سپر لیگ کے تیسرے ایڈیشن کے کوالیفائیر میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ نے لیوک رونکی کی دھواں دھار بیٹنگ کی بدولت کراچی کنگز کو آٹھ وکٹوں سے شکست دے کر فائنل میں جگہ بنا لی ہے۔

اسلام آباد یونائیٹڈ نے 155 رنز کا ہدف 12.3 اوورز میں صرف دو وکٹوں کے نقصان پر حاصل کر لیا۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی جانب سے لیونک رونکی اور صاحبزادہ فرحان نے اننگز کا آغاز کیا اور پہلی وکٹ کی شراکت میں 91 رنز بنا کر جیت کی بنیاد رکھی۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کی جیت میں اہم کردار لیوک رونکی کی شاندار بیٹنگ نے ادا کیا۔ رونکی نے صرف 39 گیندوں پر 12 چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 94 رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔

یہ بھی پڑھیے

مصباح الحق انجری کے باعث پی ایس ایل 3 سے باہر

غیرملکی کرکٹرز میں کون پاکستان جائے گا کون نہیں؟

کراچی کنگز کی جانب سے گذشتہ میچ میں چار وکٹیں حاصل کرنے والے بولر عثمان شنواری اس میچ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ نہ کر سکے اور انھوں نے اپنے چار اوورز میں 44 دے کر ایک وکٹ حاصل کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ PSL

اس سے پہلے کراچی کنگز نے اسلام آباد یونائیٹڈ کے خلاف ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو ابتدا میں زیادہ سود مند ثابت نہ ہوا۔

کپتان مصباح الحق کی غیر موجودگی کے باوجود اسلام آباد یونائیٹڈ کے کھلاڑیوں نے میچ کا آغاز زبردست طریقے سے کیا اور محمد سمیع نے میچ کے چوتھے اوور میں خرم منظور کا اپنی ہی بولنگ پر شاندار کیچ لیا اور پھر اسی اوور کی آخری گیند پر کراچی کے سب سے کامیاب بلے باز بابر اعظم ایک غیر ذمہ دارانہ شاٹ کھیلتے ہوئے صفر پر آؤٹ ہو گئے۔

آٹھویں اوور میں کپتان آئن مورگن بھی عماد بٹ کی گیند پر 21 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔ دسویں اوور کے اختتام تک کراچی کنگز نے 52 رنز بنائے تھے۔

جو ڈینلی اور کولن انگرام نے اس کے بعد اننگز کو سنبھالا دیا لیکن جے پی ڈومنی کی قیادت میں اسلام آباد کے بولرز نے نپی تلی بولنگ جاری رکھی۔

ان دونوں کے درمیان 82 رنز کی شاندار شراکت قائم ہوئی جس نے کراچی کنگز کو مناسب ہدف تک لے جانے میں بڑی مدد کی۔

جو ڈینلی نے 51 رنز بنائے لیکن محمد سمیع کی گیند پر وہ ہٹ وکٹ ہو گئے۔

آخری چند اوورز میں کولن انگرام نے دھواں دار بیٹنگ کی اور ناقابل شکست 68 رنز بنائے جس میں چھ چھکے بھی شامل تھے۔

ان کی بیٹنگ کی بدولت کراچی کنگز نے 20 اوورز میں چار وکٹوں کے نقصان پر 154 رنز بنائے۔

اسلام آباد یونایئٹڈ کی جانب سے محمد سمیع نے دو وکٹیں حاصل کی۔ فہیم اشرف نے بھی ایک وکٹ حاصل کی لیکن وہ کافی مہنگے ثابت ہوئے اور انھوں نے چار اوورز میں 53 رنز دیے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں