'مغرب روس کو فٹبال ورلڈ کپ کی میزبانی سے محروم کرنا چاہتا ہے'

ورلڈ کپ
،تصویر کا کیپشن

رواں سال فیفا فٹبال ورلڈ کپ کی میزبانی روس کے حصے میں آئی ہے

روسی وزارت خارجہ کی ترجمان ماریہ زخارووا نے الزام لگایا ہے کہ برطانیہ اور امریکہ موسم گرما میں ہونے والے فٹبال ورلڈ کپ کی میزبانی سے روس کو محروم کرنا چاہتے ہیں۔

روسی ٹی وی چینل سے تفصیلی انٹرویو کے دوران انھوں نے کہا کہ ان کا 'اصل مقصد فٹبال ورلڈ کپ کو روس سے باہر لے جانا ہے۔'

برطانیہ روس پر الزام لگاتا ہے کہ اس نے برطانیہ میں ایک سابق روسی جاسوس پر حواس کو متاثر کرنے والے مادے سے حملہ کیا ہے اور وہ اسے سزا دینا چاہتا ہے۔

برطانوی وزیر خارجہ بورس جانسن نے روس میں منعقد ہونے والے ورلڈ کپ کا سنہ 1936 میں ہونے والی نازی جرمنی کے اولمپکس سے موازنہ کیا ہے۔

جبکہ حزب اختلاف کے ایک رکن پارلیمان نے ورلڈ کپ کو ملتوی کرنے یا پھر وہاں سے ہٹا لینے کی بات کہی ہے۔

بہر حال ابھی یہ علم نہیں ہے کہ آیا انگلینڈ کی ٹیم جون میں شروع ہونے والے ان مقابلوں کا بائیکاٹ کرے گی۔

،تصویر کا کیپشن

جون میں ورلڈ کپ کا افتتاح ہونا ہے

سابق روسی جاسوس کو زہر دیے جانے کے معاملے پر سینکڑوں سفارت کاروں کو دونوں جانب سے ملک بدر کیا گیا ہے۔

جمعے کو 170 روسی سفارتکاروں اور ان کے اہل خانہ نے واشنگٹن کو الوداع کہا جبکہ سینٹ پیٹرز برگ میں امریکی سفارتخانے کو بند کرنے کا حکم دے دیا گیا ہے۔

روسی چینل-5 سے بات کرتے ہوئے ترجمان زخارووا نے کہا: 'میرا خیال ہے کہ وہ ورلڈ کپ روس سے باہر لے جانا چاہتے ہیں۔

'اس کے لیے وہ کوئی بھی طریقہ اختیار کریں گے۔ ان کا ذہن صرف فٹبال پر مرکوز ہے کہ خدا نہ کرے یہ روسی میدان میں اترے۔'

روس جاسوس کو زہر دینے جانے میں اپنے ملوث ہونے کی تردید کرتا ہے۔