میراڈونا کی شرارتیں انھیں سرخیوں میں رکھتی ہیں

The legendary former player doesn't hold back in terms of emotions تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption سینٹ پیٹرز برگ میں ارجنٹینا کی نائیجیریا کے خلاف ڈرامائی فتح کے دوران میراڈونا نے فوٹوگرافروں کو کافی مصروف رکھا

اگر میسی یہ کہیں کہ ان کے ساتھ ناانصافی ہو رہی ہے تو آپ انھیں معاف کر سکتے ہیں۔

نائیجیریا کے خلاف میچ میں لیونل میسی نے اس ورلڈ کپ میں اپنا پہلا گول کیا اور ان کی کپتانی میں ارجنٹینا نے ناک آؤٹ مرحلے کے لیے کوالیفائی کیا، لیکن اس میچ کی خبریں اس شخص کی خبروں میں دب گئیں جن سے ساری دنیا میسی کا موازنہ کرتی ہے۔

یہ موازنہ سٹار فٹبالر کرسٹیانو رونالڈو کے ساتھ نہیں بلکہ سابق سٹار کھلاڑی میراڈونا سے تھا۔

شرارتیں

میراڈونا کی شرارتیں کبھی بھی سرخیوں سے باہر نہیں رہتیں اور شاید وہ غلط وجوہات کی بنا پر روس میں میسی سے زیادہ توجہ حاصل کیے بیٹھے ہیں۔

سینٹ پیٹرز برگ میں ارجنٹینا کی نائیجیریا کے خلاف ڈرامائی فتح کے دوران میراڈونا نے فوٹوگرافروں کو کافی مصروف رکھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption میراڈونا کی شرارتیں کبھی بھی سرخیوں سے باہر نہیں رہتیں

کک آف سے پہلے انھوں نے کچھ مداحوں کے اصرار پر ایک ایسا بینر تھاما جس میں انھیں ایک سینٹ کے طور پر دکھایا گیا تھا۔

پھر انھوں نے ارجنٹینا کے پہلا گول پر جنون کے ساتھ خوشی کا اظہار کیا، مگر دوسرے ہاف میں میچ کے شور شرابے کے باوجود وہ سوئے ہوئے نظر آئے۔

جب 85 ویں منٹ میں ارجنٹینا نے دوسرا گول کر کے فتح کو تقریباً یقینی بنا دیا تو اس وقت انھوں نے جوش میں خوشی اور غصے دونوں کا اظہار کیا۔

اس گول کے جشن میں میراڈونا نے اپنے دونوں ہاتھوں کی درمیانی اگلیوں کا اشارہ کر کے شائقین کا جواب دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption جب 85 ویں منٹ میں ارجنٹینا نے گول کر کے فتح کو تقریباً یقینی بنا دیا تو اس وقت انھوں نے جوش میں خوشی اور غصے دونوں کا اظہار کیا

ان کے اس اشارے پر انٹرنیٹ پر خوب بحث چھڑی اور اس کے چند لمحوں بعد کی تصاویر میں میراڈونا کو ان کی سیٹ سے اٹھا کر لے جائے جانے پر افواہوں کا بازار گرم ہو گیا کہ انھیں ہسپتال لے جایا گیا ہے۔

یاد رہے کہ کچھ سال قبل انھیں منشیات اور شراب کے مسائل کی وجہ سے متعدد بار ہسپتال لے جایا جا چکا ہے۔

خوش قسمتی سے اس مرتبہ معاملہ کافی بہتر تھا اور سٹیڈیم میں موجود طبی عملے نے ہی انھیں امداد فراہم کر دی۔

’وہ خود پر مذاق سے خوش ہوتے ہیں‘

میراڈونا کے سابق ایجنٹ جان سمتھ نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ’جب 80 اور 90 کی دہائی میں میں ان کے ساتھ تھا تو وہ زندگی سے بہت خوش تھے مگر اس وقت ان کا مسئلہ یہ ہے کہ وہ زیادہ سوتے نہیں اور نیند کی گولیاں لیتے ہیں، اسی لیے جب دن کے دوران وہ کوئی بھی اور چیز جیسے کہ شراب پیتے ہیں تو اس کا اثر پڑتا ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption 'وہ خود پر مذاق سے کبھی کبھی بہت محضوض ہوتے ہیں۔ مجھے یہ سمجھ آتی ہے کہ لوگ اس پر تنقید کیوں کرتے ہیں مگر دل سے وہ بہت اچھا انسان ہے۔'

’وہ خود پر مذاق سے کبھی کبھی بہت محظوظ ہوتے ہیں۔ مجھے یہ سمجھ آتی ہے کہ لوگ ان پر تنقید کیوں کرتے ہیں مگر دل سے وہ بہت اچھا انسان ہے۔‘

’میں بس امید کرتا ہوں کہ کسی دن وہ بیوقوفی میں حد نہ پار کر دیں اور کچھ برا نہ ہو جائے۔‘

سرخیوں میں رہنا

روس میں فیفا ورلڈ کپ کے دوران ہی 16 جون کو بھی انھوں نے ایک نان سموکنک سٹیڈیم میں سگار جلا کر تنازع کھڑا کر دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption کروشیا کے خلاف ارجنٹینا کی تین صفر کی شکست کے بعد وہ وی آئی پی ایریا میں رو پڑے اور ارجنٹینا کی فٹبال انتظامیہ سے کہا کہ نائیجیریا کے خلاف میچ سے قبل وہ کھلاڑیوں سے ملنا چاہتے ہیں

اس کے بعد انھوں نے جنوبی کوریائی مداح کو مبینہ طور پر نسل پرستانہ اشارہ کر کے ایک اور معاملہ کھڑا کر دیا۔ ایک مداح نے جب ان کی طرف آواز لگا کر ہوا میں بوسہ دیا تو انھوں نے اپنی انگلیوں سے آنکھیں پیلی کر کے اس کا جواب دیا۔

کروشیا کے خلاف ارجنٹینا کی تین، صفر سے شکست کے بعد وہ وی آئی پی ایریا میں رو پڑے اور ارجنٹینا کی فٹبال انتظامیہ سے کہا کہ نائیجیریا کے خلاف میچ سے قبل وہ کھلاڑیوں سے ملنا چاہتے ہیں۔

اب تک یہ واضح نہیں ہے کہ کیا ان کی یہ درخواست مانی گئی تھی یا نہیں۔

میسی اور میراڈونا

میسی کو ہر وقت یاد دلایا جاتا ہے کہ میراڈونا نے سنہ 1986 میں ورلڈ کپ جیتا تھا اور وہ خود صرف 2014 کے فائنل تک پہنچنے میں کامیاب ہوئے مگر ان دونوں کے درمیان تنازع قدرے ذاتی نوعیت کا ہے۔

سنہ 2010 کے ورلڈ کپ کے بعد دونوں کے درمیان تعلق خراب ہو گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جب میرا ڈونا کو ان کے عہدے سے ہٹایا گیا تو انھوں نے میڈیا سے کہا تھا کہ میسی نے انھیں مایوس کیا تھا

اس وقت میراڈونا ارجنٹینا کے کوچ تھے اور اس ٹونامنٹ میں ارجنٹینا کو کواٹر فائنل میں جرمنی نے چار، صفر سے ہرایا تھا۔

جب میراڈونا کو ان کے عہدے سے ہٹایا گیا تو انھوں نے میڈیا سے کہا تھا کہ میسی نے انھیں مایوس کیا تھا۔

انھوں نے کہا کہ میسی کو ورلڈ کپ کا بہترین کھلاڑی قرار دینا درست نہیں تھا۔

2016 میں ایک انٹرویو میں میسی نے بتایا کہ انھوں نے سنہ 2010 سے اب تک میراڈونا سے بات نہیں کی۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ان کی اپنی زندگی ہے، اور میری اپنی۔ اب چونکہ ہم ایک دوسرے سے بات نہیں کرتے تو ہمارا رشتہ تو بہت اچھا ہے۔‘

متعلقہ عنوانات