’نسلی تعصب‘ پر جرمنی کے ترک نژاد فٹبالر میسوت ازیل کا قومی ٹیم میں کھیلنے سے انکار

Mesut Özil and President Erdogan, 13 May 18 تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption میسوت ازیل نے صدر اردگان کو آرسینل کی قمیض دی تھی۔

جرمنی کی فٹبال ٹیم کے کھلاڑی میسوت ازیل نے ’نسلی تعصب‘ پر مبنی رویے کے سبب جرمنی کی قومی فٹبال ٹیم میں کھیلنے سے انکار کر دیا ہے۔

آرسینل کلب کی جانب سے کھیلنے والے کھلاڑی ازیل نے اپنے بیان میں کہا کہ جرمنی فٹبال فیڈریشن کی جانب اپنے ساتھ پیش آنے والے رویے کے بعد وہ ’جرمنی کی قومی ٹیم کا حصہ نہیں رہنا چاہتے۔‘

جرمن فٹبالرز کی طیب اردگان کے ساتھ تصویر پر تنقید

ترک صحافی ٹویٹ کرنے کی پاداش میں گرفتار

انھوں نے کہا کہ ورلڈ کپ میں ٹیم کی ناقص کارکردگی کا الزام بھی اُن پر ہی عائد کیا جا رہا ہے۔

یاد رہے کہ مئی میں ترک نژاد جرمنی کے فٹبالر کو لندن کے ہوٹل میں ترکی کے صدر سے ملاقات کرنے اور تصویر لینے پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

میسوت ازیل اور دوسرے جرمن کھلاڑی الیکے گوندوا نے ترکی میں انتخابات سے قبل صدر طیب اردگان سے ملاقات کی تھی۔

ازیل نے ترکی کے صدر کو اپنی دستخط کی ہوئی قیمض دیں اور قمیض پر لکھا کہ تھا کہ ’میرے عزت ماب صدر کے لیے بہت احترام کے ساتھ۔‘

ازیل کا کہنا ہے کہ انھوں نے اس ملاقات میں فٹبال کے بارے میں بات کی تھی۔

جرمنی کے کئی سیاستدانوں نے ان کھلاڑیوں کے اس اقدام کی مذمت کی ہے اور جرمنی کی جمہوری اقدار اور محب و وطنی پر سوالات اُٹھائے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ترک نژاد سٹار کھلاڑیوں کی صدر اردگان کے ساتھ تصویر

یاد رہے کہ جرمنی نے ماضی میں ترکی کے صدر طیب اردگان کی جانب سے اپنی حریفوں کے خلاف کریک ڈؤان پر شدید تنقید کی تھی۔

ازیل کا کہنا ہے تھا کہ ان کے ’خاندان کی جڑوں کی بے عزتی‘ کی جا رہی ہے۔

انھوں نے کہا کہ اُن کے خاندان کو نفرت پر مبنی ای میلز اور دھمکی آمیر کالز آ رہی ہیں جبکہ سوشل میڈیا پر بھی انہیں تنیقد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

اسی بارے میں