کرکٹ: میچ فکسر پکڑنے کے لیے آئی سی سی کی عوام سے اپیل

Aneel Munawar

،تصویر کا ذریعہAl Jazeera

،تصویر کا کیپشن

الجزیرہ کہہ چکا ہے کہ وہ متعلقہ حکام نے مکمل تعاون کریں گے تاہم وہ ممکنہ قانونی پیچیدگیوں اور ممکنہ مجرمانہ تحقیقات کا بھی خیال کریں گے۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ ایک انڈر کور ڈوکیومنٹری میں دکھائے گئے ایک مبینہ میچ فکسر کی نشاندہی کرنے میں مدد کریں۔

الجزیرہ نے یہ ڈوکیومنٹری مئی میں نشر کی تھی اور وہ اس جیسی ایک اور فلم جلد ہی نشر کرنے کا ارادرہ رکھتا ہے۔

آئی سی سی کا کہنا ہے کہ پہلی ڈوکیومنٹری میں دکھائے گئے اس شخص کے علاوہ تمام افراد کی نشاندہی کر لی گئی ہے۔ اس میں انگلینڈ اور آسٹریلیا کے کھلاڑیوں کے خلاف الزامات لگائے گئے تھے۔

دونوں ممالک کے کرکٹ بورڈز نے ان الزامات کی تردید کی تھی۔

یہ بھی پڑھیے

مواد پر جائیں
پوڈکاسٹ
ڈرامہ کوئین

’ڈرامہ کوئین‘ پوڈکاسٹ میں سنیے وہ باتیں جنہیں کسی کے ساتھ بانٹنے نہیں دیا جاتا

قسطیں

مواد پر جائیں

آئی سی سی کا کہنا ہے کہ الجزیرہ کے تعاون کے بغیر بھی انھوں نے اس حوالے سے تفتیش میں کافی کامیابی حاصل کر لی ہے۔

ادھر الجزیرہ کہہ چکا ہے کہ وہ متعلقہ حکام سے مکمل تعاون کریں گے تاہم وہ ممکنہ قانونی پیچیدگیوں اور ممکنہ مجرمانہ تحقیقات کا بھی خیال کریں گے۔

الجزیرہ کا دعویٰ ہے کہ اس میچ فکسر کا نام انیل منور ہے۔

آئی سی سی کے انسدادِ بدعنوانی یونٹ کے جنرل مینجر ایلکس مارشل کا کہنا ہے کہ ’ہم جانتے ہیں کہ ایک اور دستاویزی فلم آنے والی ہے جس میں میچ فکسر مبینہ طور پر منور اور انڈیا میں جواریوں کے درمیان بات چیت کی ریکارڈنگز ہیں۔‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’پہلے پروگرام کی طرح ہم کسی بھی دعوے یا الزام کی مکمل تفتیش کریں گے۔ ہم بدعنوانی کے الزامات چاہے وہ ماضی کے ہوں یا حال کہ، انھیں انتہائی سنجیدگی سے لیتے ہیں۔‘

انھوں نے بتایا کہ ’تاہم انیل منور کی اصل شناخت اب تک ایک راز ہی ہے۔ وہ اس پروگرام میں ایک اہم کردار تھا مگر قانون نافذ کرنے والے اداروں اور امیگریشن حکام اب تک اس کی شناخت کرنے یا اسے ڈھونڈنے میں ناکام رہے ہیں۔‘

’اسی لیے ہم عوام اور کرکٹ کی دنیا سے اپیل کر رہے ہیں کہ ان کی نشاندہی کرنے یا ڈھونڈنے کے لیے کوئی بھی معلومات ہوں تو ہم سے رابطہ کیا جائے۔ پولیس ایسی اپیلیں اکثر کرتی ہیں اور ہم نے بھی وہی راستہ اپنایا ہے۔‘