آسٹریلوی کھلاڑی نے میچ کے دوران مجھے اسامہ کہا تھا: انگلش کرکٹر معین علی

تصویر کے کاپی رائٹ PA

آسٹریلیا کے کرکٹ حکام انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے آل راؤنڈر معین علی کے ان الزام کی تحقیقات کر رہے ہیں جس میں انھیں آسٹریلین کرکٹ ٹیم کے ایک رکن نے' اسامہ' کہہ کر پکارا تھا۔

معین علی کے مطابق یہ واقعہ تین برس پہلے ایک میچ کے دوران پیش آیا اور اس وقت انھیں شدید غصہ آیا تھا جب ان کا موازنہ القاعدہ کے سابق سربراہ اسامہ بن دلان سے کیا گیا تھا۔

معین علی نے اپنی آپ بیتی میں لکھا ہے کہ ایک آسٹریلوی کھلاڑی میدان میں مجھ سے مخاطب ہوا اور کہا، ’یہ لو اسامہ!‘ مجھے اپنے کانوں پر یقین نہیں آیا۔ مجھے یاد ہے کہ میرا رنگ سرخ ہو گیا۔ مجھے کبھی کرکٹ کے میدان میں اتنا غصہ نہیں آیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں!

’آسٹریلین ٹیم اشتعال انگیز نہیں بداخلاق ہے‘

کیا ایشون، معین علی سے بہتر بولر نہیں؟

'آپ مذہب اور کھیل کو ساتھ چلا سکتے ہیں‘

غزہ کی حمایت پر کرکٹر معین علی کو وارننگ

معین علی مزید لکھتے ہیں کہ ’میں نے ایک دو کھلاڑیوں اور کوچ ٹریور بیلس کو اس بارے میں بتایا۔ انھوں نے آسٹریلوی کوچ ڈیرن لیمین سے بات کی۔ لیمین نے کھلاڑی سے پوچھا کہ تم نے معین کو اسامہ کہا ہے؟ اس نے انکار کر دیا۔‘

کرکٹ آسٹریلیا نے اس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کھیل یا معاشرے میں اس قسم کی زبان کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

خیال رہے کہ ایک دن پہلے برطانوی میڈیا کے مطابق معین علی نے کہا تھا کہ انھیں بال ٹیمپرنگ سکینڈل میں ملوث معطل آسٹریلوی کرکٹروں کے ساتھ کوئی ہمدردی نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption آسٹریلیا کی ٹیم سے ناپسندگی کی وجہ صرف اس لیے نہیں کہ وہ کرکٹ میں ہمارا پرانا دشمن ہے: معین علی

معین علی پوری آسٹریلوی ٹیم کو ہی ’بد اخلاق‘ سمھجتے ہیں۔

خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق معین علی نے اخبار دی ٹائمز کو بتایا کہ ’آسٹریلیا واحد ٹیم ہے جس کے خلاف میں پوری زندگی کھیلا اور اسے واقعی ناپسند کیا۔‘

انگلش آل راؤنڈر کا کہنا تھا کہ ’آسٹریلیا سے ناپسندگی کی وجہ صرف اس لیے نہیں کہ وہ کرکٹ میں ہمارا پرانا دشمن ہے بلکہ اس کی وجہ وہ جس طرح لوگوں اور کھلاڑیوں کو بے عزت کرتے ہیں۔‘

معین علی کہتے ہیں کہ انھیں بال ٹمپرنگ کی پاداش میں ایک سال کی پابندی کی سزا پانے والے سمتھ، وارنر اور بین کرافٹ سے کوئی ہمدردی نہیں ہے۔

واضح رہے کہ کرکٹ آسٹریلیا نے بال ٹیمپرنگ سکینڈل میں ملوث قومی کرکٹ ٹیم کے معطل کپتان سٹیو سمتھ اور نائب کپتان ڈیوڈ وارنر پر ایک ایک سال کی پابندی عائد کر دی تھی۔ ان کے علاوہ کیمرون بین کروفٹ کو نو ماہ کی پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption معین علی پوری آسٹریلوی ٹیم کو ہی 'بد اخلاق' سمھجتے ہیں

معین علی کہتے ہیں کہ ’میں عام طور پر کچھ غلط ہوجانے پر لوگوں کے لیے ہمدردی کا اظہار کرتا ہوں لیکن ان کے لیے میرے لیے ہمدری محسوس کرنا مشکل ہے۔‘

’میں نے پہلی بار ان کے خلاف سنہ 2015 کے ورلڈ کپ سے پہلے سڈنی میں کھیلا تھا، وہ آپ کے خلاف صرف سخت مزاج زبان ہی نہیں بلکہ تقریبا گالی کلوچ کر رہے تھے۔‘

وہ کہتے ہیں کہ ’مجھے پہلی بار یہ ایسا محسوس ہوا تھا۔ میں نے انھیں شک کا فائدہ دے دیا لیکن میں جتنا ان کے خلاف کھیلا اتنا ہی برا ہوا، 2015 میں ایشز سب سے بری تھیں، دراصل وہ اشتعال انگیز نہیں بلکہ بداخلاق تھے۔‘

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں