دبئی ٹیسٹ میچ سنسنی خیز مقابلے کے بعد برابری پر ختم

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption آسٹریلیا کی جانب سے عثمان خواجہ نے ایک بار پر عمدہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور 11 چوکوں کی مدد سے 141 رنز کی شاندار اننگز کھیلی، انھوں نے پہلی اننگز میں بھی 85 رنز بنائے تھے

پاکستان اور آسٹریلیا کے مابین دو کرکٹ ٹیسٹ میچوں کی سیریز کا پہلا میچ برابری پر ختم ہو گیا ہے۔

آسٹریلیا نے 462 رنز کے ہدف کے تعاقب میں دوسری اننگز میں آٹھ وکٹوں کے نقصان پر 362 رنز بنائے۔

آسٹریلیا کے کپتان ٹِم پین نے ذمہ دارانہ بٹینگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے پانچ چوکوں کی مدد سے 61 رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔

333 رنز کے مجموعی سکور پر آسٹریلیا کی یکے بعد دیگرے دو وکٹیں اس وقت گریں جب مچل سٹارک اور پیٹر سڈل بغیر کوئی سکور آؤٹ ہوئے۔

میچ کے پانچویں دن کے آخری سیشن میں یاسر شاہ نے پاکستان کو اہم کامیابی دلوائی جب انھوں نے عثمان خواجہ کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کر دیا۔ عثمان خواجہ نے امپائر کے فیصلے کے خلاف ریویو لیا تاہم آسٹریلیا کا ریویو ضائع ہو گیا۔

آسٹریلیا کی جانب سے عثمان خواجہ نے ایک بار پر عمدہ بیٹنگ کا مظاہرہ کیا اور 11 چوکوں کی مدد سے 141 رنز کی شاندار اننگز کھیلی، انھوں نے پہلی اننگز میں بھی 85 رنز بنائے تھے۔

میچ کا تازہ ترین سکور کارڈ

پہلے سیشن میں پاکستانی بولروں کی ناکامی کے بعد کھانے کے وقفے کے بعد محمد حفیظ بریک تھرو دلوانے میں کامیاب رہے جب انھوں نے ٹریوس ہیڈ کو 72 کے سکور پر ایل بی ڈبلیو کر دیا۔

ہیڈ نے چوتھی وکٹ کے لیے عثمان خواجہ کے ساتھ مل کر 132 رنز کی شراکت قائم اور اس دوران ٹیسٹ کرکٹ میں پہلی نصف سنچری بھی مکمل کی۔

یاسر شاہ نے پاکستان کے لیے پانچویں اور میچ میں اپنی پہلی وکٹ لبوشان کو ایل بی ڈبلیو کر کے حاصل کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption پہلے سیشن میں پاکستانی بولروں کی ناکامی کے بعد کھانے کے وقفے کے بعد محمد حفیظ بریک تھرو دلوانے میں کامیاب رہے جب انھوں نے ٹریوس ہیڈ کو 72 کے سکور پر ایل بی ڈبلیو کر دیا

پاکستان نے بدھ کو اپنی دوسری اننگز چھ وکٹوں کے نقصان پر 181 رنز بنا کر ڈیکلیئر کر دی تھی اور یوں اسے مجموعی طور ہر 461 رنز کی برتری حاصل ہوئی تھی۔

اس ریکارڈ ہدف کے تعاقب میں آسٹریلیا کی جانب سے عثمان خواجہ اور آرون فنچ نے اننگز کا پراعتماد آغاز کیا تھا اور 72 رنز کی شراکت قائم کی تھی۔

یہ بھی پڑھیے

آسٹریلیا کو جیت کے لیے 326 رنز درکار، سات وکٹیں باقی

دبئی ٹیسٹ: دوسرے دن کا کھیل، پاکستان کی برتری 452

دبئی: پہلے دن کا کھیل پاکستانی بلے بازوں کے نام

’دبئی میں ٹیسٹ جیتنا کوئی آسان کام ہے؟‘

تاہم پھر پہلی اننگز میں چار وکٹیں حاصل کرنے والے محمد عباس نے ایک ہی اوور میں پہلے ایرون فنچ اور پھر شان مارش کو آؤٹ کروا کے پاکستان کو دوہری کامیابی دلوا دی تھی۔

اپنے پہلے ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں نصف سنچری بنانے والے ایرون فنچ دوسری اننگز میں صرف ایک رن کی کمی سے نصف سنچری مکمل نہ کر سکے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption دوسری اننگز میں محمد عباس پاکستان کے لیے سب سے کامیاب بولر رہے ہیں

اپنے اگلے ہی اوور میں محمد عباس نے مچل مارچ کو پہلی اننگز کی طرح ایل بی ڈبلیو کر دیا تھا۔ یہ فیصلہ پاکستان کے حق میں تھرڈ ایمپائر کی مدد سے ریویو کے نتیجے میں آیا۔

دو اوور میں تین وکٹیں گنوانے کے بعد لگ رہا تھا کہ شاید ایک بار پھر آسٹریلیا کے بلے باز پہلی اننگز کی طرح سنبھل نہیں پائیں گے لیکن عثمان خواجہ نے اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے ٹریوس ہیڈ کے ساتھ مل کر دن کے اختتام تک 49 رنز کی شراکت قائم کی اور اپنی ٹیم کو مزید نقصان سے بچا لیا۔

پاکستان کی جانب سے اس میچ میں بلال آصف کو ڈیبو کروایا گیا ہے جنھوں نے پہلی اننگز میں چھ وکٹیں لی ہیں جبکہ آسٹریلیا کی جانب سے تین کھلاڑیوں نے اپنا ڈیبو کیا ہے۔

ان میں ٹریوس ہیڈ اور آرون فنچ محدود اوورز کی کرکٹ میں آسٹریلوی ٹیم کے رکن رہے ہیں جبکہ آل راؤنڈر مارنس لابوس چین بین الاقوامی کرکٹ میں پہلی دفعہ آسٹریلیا کی نمائندگی کر رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP/Getty Images

اسی بارے میں